The news is by your side.

Advertisement

بھارتی فوج کشمیری خواتین کے ساتھ مردوں کوبھی زیادتی کا نشانہ بنارہی ہے، لرزہ خیز انکشاف

لندن : مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوج کے لرزہ خیزمظالم سامنے آگئے، برطانوی اخبارنے انکشاف کیا ہے کہ بھارتی فورسز مقبوضہ وادی میں خواتین کے ساتھ ساتھ مردوں کوبھی زیادتی کا نشانہ بنا رہی ہیں، سترفیصد آبادی مسلسل تشددسے ذہنی مریض بن چکی ہے۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوج کے گھناؤنے اورانسانیت سوزمظالم سے برطانوی اخبارنے پردہ اٹھا دیا، برطانوی اخبار کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ بھارتی فورسز مقبوضہ کشمیرمیں خواتین کے ساتھ مردوں کوبھی زیادتی کا نشانہ بنا رہی ہیں، پوری آبادی ذہنی اورجسمانی زیادتیوں کا شکارہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا کشمیری بھارتی فورسزکی زیادتیوں سےماؤں،بہنوں کوبچانےسےقاصرہیں، بھارتی فوجی گرفتارکشمیری نوجوانوں پربدترین تشدد اورزیادتی کرتے ہیں۔

برطانوی اخبار کا کہنا تھا مقبوضہ وادی کی سترفیصد آبادی مسلسل تشددسے ذہنی مریض بن چکی ہے اور سازش کے تحت کشمیریوں کومنشیات کا عادی بنایا جارہا ہے۔

مزید پڑھیں :   بھارتی فوج کشمیری خواتین کی عصمت دری کوجنگی حربے کے طورپراستعمال کررہی ہے

دوسری جانب ایمنسٹی انٹرنیشنل کی رپورٹ کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتی رویےمیں 5اگست کے بعدشدت آئی ہے ، وادی میں نوےکی دہائی کی طرح محاصرے کے دوران مردوں کوکھلے مقام پرلے جایا جاتا ہے۔مردوں سے تفتیشی مراکز اور خواتین کوگھروں میں زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

گذشتہ روز  انسانی حقوق کی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کے حوالے سے کہا کہ بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں عصمت دری کو جنگی حربے کے طور پر استعمال کررہی ہے، مقبوضہ وادی میں آزادی کی جدوجہد کو دبانے کے لئے بھارتی فورسز خواتین کو نشانہ بناتی ہیں۔

ہیومن رائٹس واچ کا کہنا تھا کہ کشمیری خواتین کی عصمت دری کرنے والے بھارتی فوجی اہلکاروں کو سزا نہیں دی جاتی، اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق آرمڈ فورسزاسپشل ایکٹ کے تحت بھارتی فوج کو غیر معمولی اختیارات دئیے گئے ہیں، کالے قانون کے تحت بھارتی فوجیوں کو ہر قسم کے مقدمے سے استثنیٰ حاصل ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں