The news is by your side.

Advertisement

بھارتی انتہا پسند تنظیم کی فلم سازکرن جوہر اور مہیش بھٹ کو دھمکی

ممبئی : بھارتی انتہا پسند تنظیم نے فلم سازکرن جوہر اور مہیش بھٹ کو دھمکی دی ہے کہ اگر پاکستانی فنکاروں کے ساتھ کام کیا تو گلیوں میں گھما گھما کر ماریں گے۔

بھارتی انتہا پسند حد سے آگے نکل گئے اور اپنے لوگوں کو بھی نہ بخشا، بھارتی انتہاپسندوں نے ہدایتکارمہیش بھٹ اور کرن جوہرکو وارننگ دیدی ہے کہ پاکستانی فنکاروں کے ساتھ کام کیا تو ماریں، پیٹیں گے۔

انتہا پسن تنظیم کے سربراہ چترپٹ سینا کا کہنا ہے کہ اڑی حملے کے بعد ہم نے فلم انڈسٹری سے پاکستانی فنکاروں کے ساتھ کام نہ کرنے کی اپیل کی تھی لیکن مہیش بھٹ اور کرن جوہر نے ہماری اپیل پر مثبت جواب نہیں دیا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر وہ کسی بھی پاکستانی فنکار کے ساتھ کام کرتے ہیں، تو انہیں ہماری جانب سے جواب کے لئے تیار رہیں چاہئے۔

خیال رہے کہ انتہا پسندوں نے بھارت میں کام کرنے والے تمام پاکستانی فنکاروں کو ملک چھوڑنے کی دھمکی دی تھی اور کہا تھا کہ 48 گھنٹے کے اندر بھارت چھوڑ دیں ، ورنہ نتائج کے خود ذمہ دار ہونگے۔

دوسری جانب مسلسل دھمکیوں کے بعد مشکل میں پھنسے کرن جوہر نے فلم اے دل ہے مشکل میں فواد خان کی جگہ سیف علی خان کو لینے کا فیصلہ کرلیا۔


مزید پڑھیں : پاکستانی اداکار ماہرہ خان کو فلم رئیس سے نکال دیا گیا، بھارتی میڈیا


گذشتہ روز بھارتی انتہا پسندوں نے فلم ’رئیس‘ کے پروڈیوسر رتیش سدھوانی پر اتنا دباؤ ڈالا کہ پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان کی جگہ دوسری ہیروئن لینے کا فیصلہ کیا گیا۔

اس سے پہلے پاکستانی اداکاروں کی حمایت پر انتہا پسندوں نے سلمان خان کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔


مزید پڑھیں : فواد خان کو بھارتی فلم ایم ایس دھونی سے نکال دیا گیا


واضح رہے کہ انتہا پسندوں نے بھارتی فلمسازوں پر اتنا زور دیا کہ بلاآخر انہیں فواد خان کو بھارتی فلم ایم ایس دھونی سے مجبورا نکالنا پڑا، فلم کے ہدایتکارنیرج پانڈے کا کہنا ہے کہ فلم سے فواد خان کے سارے سین نکال دیئے ہیں،  کیونکہ فلم کے ریلیز میں کسی بھی قسم کی پریشانی نہیں چاہتا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں