site
stats
حیرت انگیز

بھارتی سیاست دان کا بی کام میں ’فزکس‘ پڑھنے کا دعویٰ

نئی دہلی: بھارتی ریاست آندھرا پردیش کی حکمران جماعت کے ایم ایل اے نے بی کام کی تعلیم کے دوران فزکس اور میتھ پڑھنے کا حیرت انگیز دعویٰ کردیا۔

بھارتی اخبار ہندوستان ٹائمز کی ویب سائٹ کے مطابق بھارت کی تیلگو ڈیشام پارٹی سے تعلق رکھنے والے ایم ایل اے جلیل خان نے یہ دعویٰ ایک ٹیلی ویژن انٹرویو کے دوران کیا۔

ان سے سوال کیا گیا کہ کیا آپ کو کامرس میں دلچسپی تھی یا آپ چارٹرڈ اکاونٹنٹ بننا چاہتے تھے تو اس کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ’’ میں نے بی کام میں داخلہ اس لیے لیا کہ مجھے میتھ اور فزکس میں دلچسپی تھی‘‘۔

اس موقع پر انٹرویو لینے والے شخص نے جو کہ خود بھی ایک بی کام گرایجویٹ تھا‘ اس نے سیاسی رہنما کی تصیح کرنے کی کوشش کی کہ میتھ اور فزکس بی کام میں نہیں پڑھائے جاتے تاہم جلیل خان انتہائی خود اعتمادی کے ساتھ اپنے دعوے پر قائم رہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ’’ کس نے کہا کہ نہیں پڑھائے جاتے ‘ ممکن ہے تم بھول گئے ہو‘‘۔

نہ صرف یہ بلکہ ایک قدم آگے بڑھتے ہوئے انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ میتھ بچپن سے ان کے لیے ایک آسان مضمون رہا ہے اور انہوں نے کبھی بھی کیلکولیٹر کا استعمال نہیں کیا۔ اس کے باوجود ان کے سومیں سو نمبر آئے تھے۔

ان کا یہ مضحکہ خیز انٹرویو فوراً ہی بھارتی عوام نے سوشل میڈیا پر وائرل کرنا شروع کردیا اور نہ صرف مذکورہ سیاسی رہنما بلکہ ان کی سیاسی جماعت اور پورے سیاسی نظام کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔

جلیل خان وجے وادا مغربی اسمبلی میں کانگریس کے ٹکٹ پر منتخب ہوئے تھے تاہم بعد ازاں انہوں نے تیلگو ڈیشام پارٹی میں شمولیت اختیار کرلی۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top