The news is by your side.

Advertisement

شاہ محمود قریشی کا کابل جانے کے بھارتی واویلا کا کرارا جواب

اسلام آباد : وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کابل جانے کے بھارتی واویلے کا جواب دیتے ہوئے کہا بھارتی میڈیا کوبات کرنے سے پہلے تصدیق کرنی چاہیے، کابل نہیں گیا،پاکستان میں ہی اہم میٹنگز اٹینڈ کیں۔

تفصیلات کے مطابق افغانستان کی موجودہ صورتحال پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اہم بیان میں کہا کہ بھارتی میڈیا نےمیرےکابل جانےکاواویلا کیا اور غیر ذمہ دارانہ گفتگو کی، بھارتی میڈیا کوبات کرنے سے پہلے تصدیق کرنی چاہیے، کابل نہیں گیا،پاکستان میں ہی اہم میٹنگز اٹینڈ کیں۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ کل یورپی یونین کےخارجہ امور کے سربراہ جوزف بوریل سےگفتگو ہوئی اور افغانستان کی صورتحال پرتبادلہ خیال کیا گیا ، صورتحال کےتناظر میں اہم ممالک کےدورے پر روانہ ہورہاہوں، چین کےساتھ ہماری گفتگو ہو چکی ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ افغانستان ایک کثیرنسلی ملک ہے، افغانستان میں پشتونوں کےعلاوہ دوسرےلوگ بھی بستےہیں، افغانستان میں جوحکومت آئے وہ وسیع البنیاد ،اجتماعیت کی حامل ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن مخالف قوتیں ’اسپائیلرز‘آج بھی متحرک ہیں، وہ قوتیں نہیں چاہتیں کہ افغانستان میں دیرپاامن ہو، پاکستان اورخطےکے ہمسایہ ممالک افغانستان میں امن چاہتے ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ بھارت کواپنی محدود سوچ کوترک کرناہوگا، بھارت پاکستان کونیچادکھانےکی سوچ پرکاربندرہاتوخطےکی خدمت نہیں کرےگا، بھارت افغانستان کیساتھ اچھےتعلقات کادعویداررہاہے،بھارت کےافغانستان سےاچھےتعلقات پراعتراض نہیں۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ ہمارافوکس کسی ایک گروپ پرنہیں،ہماری سوچ افغانستان کی بہتری ہے، افغانستان میں خوشحالی ،ترقی عوام کیلئےسازگارماحول پیدا کرنا چاہتے ہیں اور افغان عوام کےبارے میں سوچنے والوں سے بات کررہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ عالمی برادری کوافغانستان سےتعلقات بحال رکھنےچاہیے اور افغان عوام کو یہ تاثر دیناچاہیے کہ ہم انہیں بھولےنہیں، باہر جانے والوں کی مدد کریں گے،افراتفری نہ پھیلائی جائے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ دعاگو ہیں کہ افغانستان ترقی کرے، افغانستان کی ترقی کیلئے پڑھےلکھے لوگ درکار ہیں، جان کا تحفظ،بنیادی حقوق کا احترام اور افغانستان کا بہتر مستقبل ضروری ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں