The news is by your side.

Advertisement

آبی تنازعات پر بھارت کی ہٹ دھرمی برقرار

اسلام آباد :  سندھ طاس معاہدے پر بھارت کی ہٹ دھرمی جاری ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ طاس معاہدے کے تحت بھارتی آبی ماہرین نے 3ماہ گزرنےکےباوجودپاکستان کادورہ نہیں کیا۔

تفصیلات کے مطابق آبی تنازعات پر بھارت کی ہٹ دھرمی برقرار ہے ، ذرائع کا کہنا ہے کہ بھارتی آبی ماہرین نے 3ماہ گزرنے کے باوجود پاکستان کا دورہ نہیں کیا، اس حوالے سے پاکستان نے بھارت کو دورے کے لیے 3 مراسلے بھی بھجوائے۔

ذرائع نے کہا کہ سندھ طاس معاہدے کے تحت بھارتی وفد نے پاکستان کا دورہ کرنا تھا اور پاکستان نےبھارتی انڈس واٹرکمشنر ، وفد کو پراجیکٹس کی سائٹ انسپکشن کرانی تھی۔

ذرائع کے مطابق سندھ طاس معاہدے کے تحت بھارتی وفد نے لازمی دورہ کرنا ہے کیوںکہ بھارت میں ہونیوالے اجلاس میں طے تھاکہ بھارتی وفد بھی دورہ کرے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ انڈس واٹر ٹریٹی کےتحت سال یکم اپریل سےشروع ہوتا ہے ، یکم اپریل کے بعد بھارتی وفد نے پاکستان کا دورہ کرنا تھا۔

یاد رہے رواں سال مارچ میں پاکستانی انڈس واٹر کمیشن کے وفد نے نئی دہلی میں 2روزہ مذاکرات میں حصہ لیا تھا ، 8رکنی وفد کی قیادت انڈس واٹر کمشنر مہر علی شاہ نے کی جبکہ بھارتی وفد کی قیادت انڈس واٹر کمشنر پردیپ کمار سکسینہ نے کی تھی۔

واہگہ بارڈر پر انڈس واٹرکمشنر مہرعلی شاہ نے بتایا تھا کہ بھارتی سائیڈ نے ہمارے موقف کوپوری توجہ سےسنا، پرامیدہیں کہ ہرسال اب یہ میٹنگ کاسلسلہ چلتا رہے گا، میٹنگ میں بھارتی پراجیکٹ پرٹیکنیکل اعتراضات اٹھائےتھے، اعتراضات پر غور کرنے کی گارنٹی دی گئی اور بھارتی حکام نے پاکستان کے دورے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

پاکستانی وفد کےاعتراضات پربھارت نےسنجیدگی سےغورکی یقین دہانی کرائی تھ

Comments

یہ بھی پڑھیں