The news is by your side.

Advertisement

نریندر مودی کو دوسری بار وزیر اعظم کا عہدہ سنبھالنے کے بعد بڑا جھٹکا

نئی دہلی: بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو دوسری بار وزارت عظمیٰ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد بڑا جھٹکا لگا ہے، امریکا نے بھارت کو دیا جانے والا جی ایس پی کا درجہ ختم کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکا نے بھارت کو دیا جانے والا جی ایس پی درجہ ختم کر دیا ہے، یہ امریکا کی جانب سے وزیر اعظم مودی کے لیے بڑا جھٹکا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارت کو ترجیحی ممالک کی فہرست سے باہر کر کے واضح پیغام دے دیا ہے۔

خیال رہے کہ 2017 میں بھارت کو جی ایس پی درجے سے سب سے زیادہ فائدہ ملا تھا، 2017 میں بھارت کو اس کی وجہ سے 5 ارب 70 کروڑ ڈالر کی ٹیکس چھوٹ ملی۔

یہ بھی پڑھیں:  امریکا کا بھارت کو دیے گئے جی ایس پی کا درجہ ختم کرنے کا فیصلہ

ٹرمپ کے فیصلے کے بعد بھارت اپنی اشیا امریکا میں ڈیوٹی فری لے جانے کی سہولت سے محروم ہو گیا ہے۔

مارچ میں امریکی صدر نے کہا تھا کہ بھارت اپنی مارکیٹوں میں مناسب رسائی دینے میں ناکام ہو گیا ہے، جس کے بعد یہ بالکل درست ہے کہ انڈیا سے استفادہ کرنے والے ترقی پذیر ملک کا درجہ واپس لے لیا جائے۔

یہ حالیہ اقدام ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے اس پالیسی کا حصہ ہے جس کے تحت امریکا دیگر ممالک کے ساتھ غیر متوازن تجارتی تعلقات کو از سر نو دیکھنے لگا ہے۔

امریکی حکومت کے ڈیٹا کے مطابق 2018 میں بھارت نے امریکا کو 54 بلین ڈالرز کی اشیا برآمد کیں جب کہ امریکا سے صرف 33 بلین ڈالرز مالیت کی اشیا خریدیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں