بالواسطہ ٹیکسوں میں وصولی کا حجم بلند ترین شرح پر -
The news is by your side.

Advertisement

بالواسطہ ٹیکسوں میں وصولی کا حجم بلند ترین شرح پر

اسلام آباد: ان دیکھے ٹیکسوں نے غریب عوام کی کمر توڑ ڈالی ہے تاہم اس کے باوجود پاکستان کے متوسط طبقے کے افراد پابندی سے مختلف ٹیکس ادا کر رہے ہیں جس کے باعث بالواسطہ ٹیکسوں کی مد میں وصولی کا حجم 28 کھرب روپے سے تجاوز کرگیا۔

ان ڈائریکٹ یا بالواسطہ ٹیکس کی شرح پاکستان میں سب سے زیادہ ہے اور پاکستان نے اس حوالے سے بھارت اور بنگلہ دیش کو بھی پیچھے چھوڑ دیا۔

پاکستان میں مجموعی ٹیکس وصولیوں میں بالواسطہ ٹیکسوں کا تناسب 88.7 فیصد کی سطح پر آچکا ہے۔

مزید پڑھیں: آپ دن بھر میں کتنے ٹیکس ادا کرتے ہیں؟

اس کے برعکس براہ راست یا بلا واسطہ ٹیکس میں کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔ براہ راست ٹیکسوں کا تناسب 11 فیصد کے لگ بھگ ہوگیا ہے۔

یاد رہے کہ بالواسطہ یا ان ڈائریکٹ ٹیکس اشیا و مصنوعات کی خرید و فروخت، خدمات پر ٹیکس اور ایکسائز ٹیکس کی شکل میں وصول کیے جاتے ہیں جبکہ بلا واسطہ یا ڈائریکٹ ٹیکس میں انکم، کیپیٹل گینز، ویلتھ اور پراپرٹی ٹیکس شامل ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں