The news is by your side.

Advertisement

انڈونیشیا کے گاؤں‌ میں‌ خونی سیلاب، شہری خوفزدہ

جکارتہ: انڈونیشیا کے  گاؤں میں آنے والے سیلاب کے بعد دریا کا پانی خونی سرخ رنگ کا ہوگیا، جس کو دیکھ کر شہری بہت زیادہ خوفزدہ ہوئے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق انڈونیشیا کے گاؤں جینگوٹ میں ہفتے کے روز سیلاب آیا جس کے بعد کپڑا رنگنے والی فیکٹری کے قریب واقع دریا کا پانی گہرے سرخ رنگ کا ہوگیا جبکہ گلیوں میں بھی خونی رنگ کا پانی جمع ہوگیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر صارفین نے انڈونیشیا کے وسطی علاقے جاوا کے شہر  پیکالونگان میں واقع گاؤں میں سرخ ہونے والے پانی کی تصاویر شیئر کیں۔

سوشل میڈیا کے کچھ صارفین نے کہا کہ انہیں یہ پانی دیکھ کر خون ’خونی ندی‘ یاد آگئی۔

ایک سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ ’یہ تصاویر دیکھنے کے بعد میں بہت زیادہ خوفزدہ ہوگئی کیونکہ ایسا محسوس ہورہا ہے جیسے خون کی بارش ہوئی ہے‘۔

واضح رہے کہ پیکا لونگان شہر میں باتیک فیکٹریاں ہے، جو انڈونیشیا کپڑوں پر ثقافتی ڈیزائن بناتی ہیں۔

مقامی حکام کے مطابق پانی کا رنگ فیکٹری سے نکلنے والے کیمیکل کی وجہ سے تبدیل ہوا۔

حکام نے یہ بھی بتایا کہ فیکٹریوں میں مختلف رنگ استعمال کیے جاتے ہیں، اسی وجہ سے دریا کا رنگ مختلف ہوجاتا ہے۔ ایک ماہ قبل دوسرے گاؤں میں دریا کا پانی گہرے سبز رنگ کا ہوگیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں