site
stats
عالمی خبریں

انڈونیشیا میں آتش فشاں کسی بھی وقت پھٹ سکتا ہے، حکام

بالی : انڈونیشیا کے جزیرے بالی میں آتش فشاں سےدھواں نکلنے کاسلسلہ جاری ہے، دھوئیں کے بادلوں نے بڑے علاقے کولپیٹ میں لے لیا۔حکام نے خبردارکیا ہے کہ آتش فشاں کسی بھی وقت بھی پھٹ سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق انڈو نیشیا کے مشہور ساحلی و سیاحتی جزیرے بالی میں آتش فشاں پھٹنے کے خوف سے اب تک سوالاکھ سے زائد افراد گھر چھوڑنے پر مجبور ہوگئے ہیں جبکہ نقل مکانی کا سلسلہ جاری ہے۔

 

 

یشی جزیرے بالی میں آتش فشاں پھٹنے کے خطرے کے باعث قریبی علاقے سے ایک لاکھ افراد سے زائد کو محفوظ مقامات پر منتقل کردیا گیا ۔حکام نے بتایا ہے تقریباً ایک لاکھ 22 ہزار افراد کا انخلا ہوچکا اور یہ سلسلہ جاری ہے۔

آتش فشاں سے دھواں اور راکھ نکلنے کا سلسلہ جاری ہے، دھوئیں کے بادلوں نے بڑے علاقے کولپیٹ میں لے لیا جبکہ آتش فشاں کا لاوا اوپری سطح کی طرف بڑھ رہا ہے اور یہ کسی بھی وقت پھٹ سکتا ہے، آتش فشاں خطرناک صورتحال میں اختیار کرچکا ہے۔


مزید پڑھیں : انڈونیشیا میں آتش فشاں پھٹنے کا خدشہ


حکام نے قریبی علاقے کے رہنے والوں کو ہنگامی بنیادوں پر مطلع کیا کہ وہ اپنے گھر چھوڑ کر محفوظ مقامات پر منتقل ہوجائیں۔

نقل مکانی کرنے والوں کو عارضی کیمپوں، اسکولوں اور عمارات میں منتقل کیا جارہا ہے جبکہ عارضی کیمپوں میں خوراک، پینے کے صاف پانی اور ادویات کی وافر مقدار میں فراہم کردی گئی ہے۔

حکام نے اس پہاڑ کے 12کلو میٹر کے دائرے میں پابندیاں نافذ کر دی ہیں اور کہا ہے کہ حالیہ دنوں میں اگونگ نامی پہاڑ کےآس پاس زلزلے آتے رہے ہیں اور سطح پر ایسے مادے میں اضافہ ہوتا رہا ہے جو آتش فشاں کی خطرناک شکل اختیار کر سکتا ہے۔

انڈونیشیا کے صدر نے بھی کیمپ کا دورہ کیا اور متاثرہ لوگوں سے ملاقات کی، جو کو ویڈوڈو نے حکام کو تمام ضروری اقدامات کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی پہلی ترجیح لوگوں کی حفاظت ہے۔

اس سے قبل یہ آتش فشاں پہاڑ 1963ء میں پھٹا تھا ، جس کے نتیجے میں 1100 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے تھے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top