The news is by your side.

Advertisement

مالی سال 2019-20 کے دوران مہنگائی کی شرح کتنی رہی؟

اسلام آباد : وفاقی ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ مالی سال 2019-20کےدوران مہنگائی کی شرح10.74 فیصد رہی، ایک سال میں پیاز کی قیمت68فیصد اور دالوں کی قیمت43سے 66فیصد بڑھ گئیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی ادارہ شماریات نے گزشتہ مالی سال میں مہنگائی کےاعدادوشمار جاری کردیئے ، جس میں بتایا گیا کہ مالی سال 2019-20کےدوران مہنگائی کی شرح10.74 فیصد رہی۔

ادارہ شماریات نے کہا جون2020میں مہنگائی کی شرح میں 0.82فیصداضافہ ریکارڈ کیا گیا ، جون2019 کے مقابلے جون2020 میں مہنگائی کی شرح    8.59فیصد رہی۔

اعدادوشمار کے مطابق مالی سال2019-20 کے دوران پیاز کی قیمت 68 فیصدبڑھی اور مختلف دالوں کی قیمت 43 سے 66 فیصد بڑھ گئیں۔

مزید پڑھیں : جون کے آخری ہفتے میں مہنگائی میں اضافہ، شرح 10.21 فیصد تک جا پہنچی

یاد رہے وفاقی ادارہ شماریات نے بتایا تھا کہ ایک ہفتےکےدوران مہنگائی کی شرح میں 0.15 فیصد اضافہ اور ملک میں مہنگائی کی شرح 10.21 فیصد تک پہنچ گئی۔

ادارہ شماریات نے کہا تھا کہ ایک ہفتے کے دوران 14 اشیا مہنگی اور 7 کی قیمتوں میں کمی ہوئی جبکہ رواں ہفتے 30 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں استحکام رہا۔

اعدادو شمار کے مطابق رواں ہفتےایل پی جی گھریلوسلنڈر16 روپے مہنگا ہوا اور دودھ، گوشت، چاول ، ٹماٹر ، آلو اور دال مسور بھی مہنگی ہوئی جبکہ ایک ہفتے کے دوران انڈے، پیاز ، چائے، مصالحہ جات کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا۔

ادارہ شماریات نے بتایا کہ ایک ہفتے میں مرغی کےگوشت کی قیمت میں فی کلو 8 روپےکمی ہوئی جبکہ لہسن، دال چنا اوردال مونگ ،دال ماش اور چینی سستی ہوئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں