The news is by your side.

Advertisement

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے نیب دفتر میں تحقیقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

لاہور : نیب ٹیم کی جانب سے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے تحقیقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی، تفتیش کے دوران عثمان بزدار ہرسوال پروقت مانگتے رہے اور کہا میں تیاری کیساتھ نہیں آیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے نیب دفتر میں تحقیقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ، ذرائع کا کہنا ہے کہ عثمان بزدارپر جنوبی پنجاب میں مختلف ناموں سے جائیداد خریدنے کا الزام ہے۔

ذرائع کے مطابق نیب نےاثاثہ جات کاپرفارمہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکودےدیا اور رشتے داروں کے نام پر جائیدادیں بنانے کے الزام میں پوچھ گچھ کی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ نیب نے وزیراعلیٰ پنجاب اوراہلخانہ سے متعلق جائیدادوں کا ریکارڈ مانگ لیا، وزیراعلیٰ اوراہلخانہ نے کتنی جائیدادیں خریدیں، لیز پرلیں، تمام کا ریکارڈ طلب کرلیا ہے۔

ذرائع کے مطابق تفتیش کے دوران وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار ہرسوال پروقت مانگتےرہے اور ہرسوال پرکہتےرہےمجھے نہیں پتا ، کچھ وقت دیں ،سوچ کربتاؤں گا اور  نیب ٹیم کو جواب دیا کہ میں تیاری کیساتھ نہیں آیا۔

یاد رہے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار شراب کےغیرقانونی لائسنس کیس میں نیب کے سامنے پیش ہوئے تھے ، نیب مشترکہ ٹیم نے عثمان بزدار سے ایک گھنٹہ 40 منٹ پوچھ گچھ کی۔

نیب نے وزیر اعلی پنجاب کوسوالنامہ دے دیا اور ہدایت کی کہ تمام مطلوبہ دستاویزات 18 اگست تک نیب کو فراہم کی جائیں، عثمان بزدار کوجاری کردہ سوالات 12صفحات پر مشتمل ہیں، بعض سوالوں کے بارے میں وزیراعلی نے لاعلمی کا اظہار کیا ، وزیراعلیٰ پنجاب کے لاعلمی کے اظہار پر نیا سوالنامہ جاری کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق نیب نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے اثاثوں کی تفصیلات طلب کر لیں اور کہا 18اگست تک اپنے اور خاندان کے اثاثوں کی تفصیلات دیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں