The news is by your side.

Advertisement

وزن کم کرنے کا جادوئی فارمولا، وقفے وقفے سے فاقے کریں

بڑھتے وزن کو طبی ماہرین گمبھیر مسئلہ تصور کرتے ہیں، یہی وجہ ہے  کہ موٹاپے سے نجات کے لیے نت نئے طریقے اختیار کیے جاتے ہیں.

ایسا ہی ایک طریقہ انٹرمٹنٹ فاسٹنگ (intermittent fasting) بھی ہے، جو گزشتہ ایک عشرے میں بے حد مقبول ہوا.

اس طریقے میں وقفے وقفے سے بھوکا رہا جاتا ہے، یعنی اس میں‌ ڈائٹنگ کرنے کے لیے وقت مقررہ ہے، اس  سسٹم میں موجود دو فارمولے بہت مقبول ہیں، جس میں کھانے اور فاقوں کے دورانیے کو دو حصوں میں بانٹا گیا ہے.

ایک 5:2 فارمولا ہے، جب کہ دوسرا 16:8 فارمولا ہے. 5:2 فارمولے پر عمل پیرا افراد پانچ دن معمول کے مطابق کھانا کھاتے ہیں، جب کہ اگلے دو دن وہ 500 یا 600 کیلوریز سے زیادہ خوراک نہیں کھاتے۔ اس طرح وہ پورے ہفتے کا ڈائیٹ پلان ترتیب دیا جاتا ہے.

مزید پڑھیں: بعض لوگ بھوکے ہو کر غصہ میں کیوں آجاتے ہیں؟

دوسرا فامولا 16:8 ہے، جو زیادہ مقبول ہے، اسے اختیار کرنے والے 16 گھنٹے بھوکے رہتے ہیں اور آٹھ گھنٹے میں پانچ سے چھ سو کیلوریز کی غذا لیتے ہیں.

انٹرمٹنٹ فاسٹنگ آج کل بہت مقبول ہے.ایک بین الاقوامی سروے کے مطابق ڈائٹنگ کا یہ طریقہ گذشتہ برس مقبولیت میں سر فہرست رہا.

اس طریقے میں کھانے کے وقفے میں کم غذا لینا اہم ہے، یعنی کھانے کے دوران بھی احتیاط کا دامن تھامنے رکھنا پڑتا ہے.

چند ماہرین کے نزدیک ہی روزے ہی کی ایک شکل ہے، کچھ ڈائٹ ماہرین کے مطابق اس میں اصل کلیہ کم کیلوریز ہی ہیں.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں