The news is by your side.

Advertisement

سندھ میں محکمہ اینٹی کرپشن کی ریکارڈ کارروائیاں

کراچی: پاکستان سمیت دنیا بھر میں انسداد رشوت ستانی کا دن آج منایا جائے گا۔ اس دن کو منانے کا مقصد ملک بھر میں کرپشن کی روک تھام کے لیے آگاہی فراہم کرنا اور انسداد کرپشن کے لیے کام کرنے والے سرکاری محکموں اور غیر سرکاری تنظیموں کو خراج تحسین پیش کرنا ہے۔

آج انسداد رشوت ستانی کے دن کے موقع پر چیئرمین اینٹی کرپشن ڈپارٹمنٹ غلام قادر تھیبو کا کہنا ہے کہ کرپشن کے خاتمے کے لیے اینٹی کرپشن کو چیف منسٹر سندھ سید مراد علی شاہ، چیف سیکریٹری سندھ اور صوبے کی عوام کا بھرپور تعاون حاصل ہے۔

انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 6 ماہ میں اینٹی کرپشن نے کراچی انٹر میڈیٹ بورڈ، کے ایم سی، واٹر بورڈ، ایکسائز، ریونیو، تعلیم، صحت، محکمہ پولیس اور جیل خانہ جات جیسے اہم اداروں میں کامیاب کارروائیاں کی ہیں۔

مزید پڑھیں: ملک سے کرپشن کے خاتمے کے لیے حکومت کی انوکھی کوشش

تفصیلات کے مطابق محکمہ اینٹی کرپشن کو گزشتہ چھ ماہ میں 1896 شکایات موصول ہوئیں۔ اس عرصہ میں 51 چھاپے اور 50 سے زائد کامیاب ٹریپ ہوئے ہیں۔ 104 ایف آئی آر جب کہ 876 اوپن انکوائریز شروع کی گئیں۔

اس دوران کرپشن میں ملوث 120 سرکاری افسران کو گرفتار کیا گیا جن میں گریڈ 18 اور 19 کے افسران بھی شامل ہیں۔ محکمے نے سندھ بھر میں مختلف شعبوں کے دفاتر کے 31 اچانک دورے بھی کیے۔

گزشتہ 6 ماہ میں ریکارڈ 111 کورٹ چالان جبکہ 7 ملزمان کو سزائیں بھی ہوئیں۔

چیئرمین کا کہنا تھا کہ یہ محکمے کی تاریخ میں کی گئی ریکارڈ کاروائیاں ہیں کہ 106 مفرور ملزمان کو گرفتار کیا گیا جن میں 2007 کے مفرور ملزمان بھی شامل ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ سندھ صوبے کو کرپشن سے پاک بنا کر باقی صوبوں کے لیے سندھ کو ایک رول ماڈل بنائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں