The news is by your side.

Advertisement

آزادی اظہار رائے کے نام پر بین الاقوامی میڈیا کا پاکستان کے خلاف منفی پروپیگنڈا بے نقاب

اسلام آباد: آزادی اظہار رائے کے نام پر بین الاقوامی میڈیا کا منفی پروپیگنڈا بے نقاب ہوگیا، وائس آف امریکا پاکستان کا منفی تاثر اجاگر کرنے میں پیش پیش ہے، امریکی جریدے نے بھانڈا پھوڑ دیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی جریدے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ آزادی اظہار رائے کے نام پر بین الاقوامی میڈیا نے منفی پروپیگنڈا شروع کردیا، عالمی ذرائع ابلاغ بھاری معاوضے دے کر دھوکے سے اپنا موقف لوگوں تک پہنچانے لگا، وائس آف امریکا پر چھ ماہ میں سب سے زیادہ خبریں پاکستان کے خلاف آئیں۔

رپورٹ کے مطابق ذرائع ابلاغ کے عالمی ادارے مختلف ممالک میں مقامی لوگوں سے زہر افشانی کراتے ہیں، وائس آف امریکا کا ساؤتھ ایشین ڈیسک کا افغانی نژاد امریکی انچارج بھی سازش کا حصہ ہے۔

وائس آف امریکا افغان بیانیے کو فروغ دے کر خطے میں انتشار پھیلانے لگا ہے، وی او اے کے پشتو، دری اور اردو میں مذموم مقاصد کے لیے اوچھے ہتھکنڈے سامنے آگئے ہیں۔

دوسرے ممالک کے بارے میں بھی منفی پروپیگنڈا کرانے کا پول کھل گیا، غیرملکی جریدے نے امریکا کے وار فیئر پروپیگنڈا سے متعلق ہوشربا انکشافات کیے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق امریکا نے بھانڈا پھوٹنے پر ایران ڈس انفارمیشن پروگرام کی فنڈنگ روک دی، امریکی فنڈنگ کے ذریعے ایران کے خلاف پروپیگنڈا کرائے جانے کا انکشاف ہوا تھا۔

ایران کے خلاف پروپیگنڈا کے لیے امریکا بھاری رقوم خرچ کرتا رہا، ایران سے متعلق پروپیگنڈا کے لیے مختلف شعبوں سے وابستہ شخصیات کو نشانہ بنایا گیا۔

امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ ایران پروپیگنڈا منصوبے کی خود نگرانی کرتا رہا، ایران ڈس انفارمیشن پروگرام کے تحت اپنے ٹویٹس بھی واپس لینا پڑ گئے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکا مختلف ممالک کے بارے میں جان بوجھ کر منفی تاثر ابھارتا ہے، ایران کے بارے میں امریکی میڈیا پاکستان کے خلاف پروپیگنڈے کو بھی ہوا دینے لگا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں