site
stats
انٹرٹینمںٹ

زینب قتل: برطانوی ماڈل بھی انصاف کے لیے میدان میں آگئیں

کراچی: نامور برطانوی ماڈل کارا ڈیل ایونجنے بھی ننھی زینب کے ساتھ ہونے والی بربریت پر افسردہ ہیں انہوں نے زیادتی کے بعد قتل کرنے کے گھناؤنے فعل پر دلی دکھ کا اظہار کیا اور انصاف کے لیے آواز بلند کی۔

تفصیلات کے مطابق چھ روز قبل قصور میں پیش آنے والے واقعے کے بعد ہر دل رنجیدہ اور ہر آنکھ اشکبار ہے، ننھی زینب کو نامعلوم افراد نے اغوا کیا اور پھر 3 روز بعد گھر کے قریب سے اُس کی لاش برآمد ہوئی تھی۔

قصور کے اندوہناک واقعے پر ملک بھر  شدید احتجاج کیا گیا جس میں سول سوسائٹی اور شوبز شخصیات بھی پیش پیش نظر آئیں، تمام ہی شرکا نے متاثرہ اہل خانہ کو انصاف دینے کا مطالبہ کیا اور آئندہ ایسے اقدامات کرنے پر زور دیا کہ جس کی وجہ سے مزید بچے درندوں کی ہوس کا نشانہ نہ بن سکیں۔

مزید پڑھیں: زینب کو زیادتی کے بعد قتل کرنے والے سفاک ملزم کا خاکہ جاری

مظاہرین نے حکومت سے یہ بھی مطالبہ کیا کہ وہ واقعے میں ملوث افراد کو گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دے تاکہ آئندہ کوئی بھی شخص اس گھناؤنے کام سے باز رہے۔

یہ پہلی بار نہیں بلکہ ٹھیک ایک برس قبل قصور کے ہی علاقے میں 5 سال کی عائشہ نامی بچی کو اغوا کر کے زیادتی کے بعد قتل کیا گیا تھا جس کے قاتل تاحال گرفتار نہ ہوسکے۔

حکومت پنجاب نے واقعے کی تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی تشکیل دے دی جبکہ اعلی شخصیات نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ زینب کے اہل خانہ کو ضرور انصاف دیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: اپنے بچوں کو زیادتی سے کیسے بچایا جائے

برطانوی ماڈل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹا گرام پر زینب کے جنازے کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ’ننبھی پری ہم تم سے شرمندہ ہیں‘۔

انہوں نے زینب کو قتل کو بربریت قرار دیتے ہوئے انصاف دینے کے لیے بھی آواز بلند کی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top