The news is by your side.

Advertisement

افغان خراب صورتحال کا فائدہ عالمی دہشت گرد تنظیمیں اٹھائیں گی، فواد چوہدری نے خدشات کا اظہار کردیا

اسلام آباد : وزیراطلاعات فوادچوہدری نے خدشات کا اظہار کیا ہے کہ افغانستان کی خراب صورتحال کا فائدہ عالمی دہشت گرد تنظیمیں اٹھائیں گی، کالعدم ٹی ٹی پی،القاعدہ اور داعش افغانستان میں مراکز قائم کرسکتی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے غیرملکی سفارت خانوں کے پریس اتاشیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں جاری صورتحال پر گہری نظررکھے ہوئے ہیں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ افغانستان40ملین آبادی کاایک بڑاملک ہے اور افغانستان سےمتعلق اکانومسٹ کی حالیہ رپورٹ پریشان کن ہے، افغان عوام غربت کی زندگی گزار رہے ہیں، دنیا کو افغانستان کےعوام کی مدد کے لئے آگے آنا ہوگا۔

وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا ویڈیو میں بتایا جارہا ہے، بچوں کوخوراک کے لئے فروخت کیاجارہاہے، افغانستان میں پیدا شدہ صورتحال سے پاکستان متاثر ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم افغانستان میں ایک جامع حکومت چاہتے ہیں، دوسری جانب افغانستان میں انسانی المیہ پرتشویش ہے، افغان خراب صورتحال کافائدہ عالمی دہشتگردتنظیمیں اٹھائیں گی، القاعدہ، داعش اور کالعدم ٹی ٹی پی افغانستان میں مراکزقائم کرسکتی ہیں، ایسی صورتحال سےبچناچاہتےہیں،افغانستان میں استحکام ناگزیرہے۔

فواد چوہدری نے مزید کہا کہ قبائلی علاقوں میں ہم نے طویل عرصہ تک جنگ لڑی ہے، قبائلی علاقوں میں آپریشن کے آغاز پر 45ہزارپاکستانی افغانستان ہجرت کرگئے، یہ تمام لوگ پاکستانی ہیں،انہیں واپسی کاموقع فراہم کرناچاہئے، سفارت خانوں کو جانے والی معلومات بالکل واضح ہونی چاہئیں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ ٹیکنالوجی کے زیادہ استعمال سےفیک نیوز کےمسائل نےجنم لیا، اوباما نے کہا تھا جدید دور میں بڑاچیلنج فلوآف انفارمیشن کو منظم کرنا ہے، فلوآف انفارمیشن کا چیلنج تمام ممالک کو درپیش ہے۔

انھوں نے کہا دنیا قانون سازی سے اس مسئلے سے نمٹنےکی کوشش کررہی ہے، یورپی یونین،امریکا،برطانیہ فیک نیوز روکنے کے اقدامات کر رہے ہیں، پاکستان کے میڈیا کا شمار ترقی پذیر مالک کے میڈیا میں ہوتا ہے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستان میں200 سے زائد چینلز، 2ہزار ویب سائٹس اور یو ٹیوب چینلزکام کر رہے ہیں، یہاں 1500 روزنامہ اخبار، سیکڑوں ہفتہ وار، ماہانہ اخبارات شائع ہوتے ہیں، تقریباً 48 عالمی نیوز چینلز پاکستان میں کام کررہے ہیں۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ بھارت نے پاکستان کےخلاف غلط اورجعلی پروپیگنڈے کئے، یہ صرف پاکستان کا مسئلہ نہیں ہے، بہت سے دوسرے ممالک بھی اس قسم کے مسائل سے دو چار ہیں، فیک نیوز کے خاتمے کے لئے عالمی سطح پر کوششیں ہونی چاہئیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ سوشل میڈیا ریگولیشنز اور میڈیا کے تحفظ کو یقینی بنانا ہوگا، عالمی سطح پر میڈیا کا ضابطہ اوراقوام متحدہ کی پابندیاں ہونی چاہئیں، کسی دوسرے ملک کے خلاف سوشل میڈیا پر نفرت انگیز خبریں نہ پھیلائی جا سکیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں