site
stats
پاکستان

انتظار قتل کیس: سی ٹی ڈی نے کیس کی تحقیقات پہلے ہی کرلیں، والد

father of intizar

کراچی: شہر قائد کے علاقے ڈیفنس میں پولیس گردی کا نشانہ بننے والے انتظار حسین کے والد نے سی ٹی ڈی پولیس پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈی آئی جی سی ٹی ڈی نے کیس کی تحقیقات پہلی ہی مکمل کرلیں۔

تفصیلات کے مطابق انتظار حسین کے والد اشتیاق احمد اور وکیل نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتظار احمد کا قتل 13 جنوری کو ہوا لیکن مقدمہ 14 جنوری کو درج کیا گیا، پولیس نے ریکارڈ پیش کیا تو ایک انسپکٹر کی ولدیت نامعلوم لکھی ہوئی تھی۔

پریس کانفرنس کے دوران اشتیاق احمد کے وکیل کا کہنا تھا کہ ’عدم اعتماد کے باعث آئی جی نے تفتیش سی ٹی ڈی کو منتقل کی، کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ نے کیس سے متعلق معلومات حاصل کیں مگر اُس کے تفیتشی رپورٹ دیکھ کر لگتا ہے کہ اُس کے نتائج پہلے سے نکال رکھے تھے، ہمارے عدم اعتماد پر جے آئی ٹی تشکیل دی گئی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ جے آئی ٹی کے سامنے پولیس کو اپنی تفتیش پیش کرنی ہے،واقعے کی جوڈیشل انکوائری کے لیے وزیر اعلیٰ سندھ کو خط لکھ دیا ہے۔

خیال رہے گزشتہ روز میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے والد انتطار کا کہنا تھا کہ اسپتال میں پولیس اہلکار بیان بدل رہے تھے، ہمیں اندازہ ہوگیا تھا کہ بیٹے کے قتل میں پولیس اہلکار ہی ملوث ہیں۔

یاد رہے چند روز قبل کراچی کےعلاقے ڈیفنس میں ایک انتہائی افسوسناک واقعہ اُس وقت پیش آیا تھا کہ جب اینٹی کار لفٹنگ فورس (اے سی ایل سی) کے 4 اہلکاروں نے نامعلوم کار پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ملائشیا سے آنے والا انتظار نامی نوجوان جاں بحق ہو گیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top