The news is by your side.

Advertisement

انتظار قتل کیس: والد کا جے آئی ٹی پر عدم اعتماد کا اظہار

کراچی: شہر قائد کے علاقے ڈیفنس میں پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں قتل ہونے والے بے گناہ نوجوان انتظار کے والد نے جی آٹی پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پولیس اپنے پیٹی بند بھائیوں کو بچانے کی کوشش کر رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ڈیفنس میں اے سی ایل سی کے اہلکاروں کی فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے نوجوان انتظار احمد قتل کیس کی تحقیقات میں پولیس تاخیری حربے استعمال کرنے لگی ہے جس کے بعد مقتول کے والد نے جے آئی ٹی پر بھی عدم اعتماد کا اظہار کر دیا ہے۔

انتظار کے والد اشتیاق احمد کا کہنا تھا کہ ہمیں جے آئی ٹی کی رپورٹ مانگنے پر بھی نہیں دی گئی لیکن دوسری جانب ملزمان کے وکیل کو تحقیقاتی رپورٹ فراہم کر دی گئی ہے۔

انتظار قتل کیس میں اہم پیش رفت، تین انسپکٹرز سمیت آٹھ اہل کار برطرف

خیال رہے کہ گذشتہ دنوں انتظار کے والد کی جانب سے چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان میاں ثاقب نثار کو بھی خط لکھا گیا تھا جن میں ان کا موقف تھا کہ پولیس موقع میں ملوث اہلکاروں کو بچانے کی کوشش کر رہی ہے۔

یاد رہے کہ چند مہینے قبل کراچی کےعلاقے ڈیفنس میں ایک انتہائی افسوسناک واقعہ اُس وقت پیش آیا تھا کہ جب اینٹی کار لفٹنگ فورس (اے سی ایل سی) کے چار اہلکاروں نے نامعلوم کار پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ملائشیا سے آنے والا انتظار نامی نوجوان جاں بحق ہو گیا تھا۔

انتظار قتل کیس: والد تفتیش سے دلبرداشتہ، چیف جسٹس کو خط لکھ دیا

واضح رہے کہ واقعے کے رونما ہونے کے بعد وزیر داخلہ سندھ سہیل انور سیال نے اہلخانہ سے تعزیت کرتے ہوئے کہا تھا کہ واقعے کی شفاف تحقیقات کی جارہی ہے، جلد ملزمان کو کیفرِ کردار تک پہنچایا جائے گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں