site
stats
پاکستان

قومی اسمبلی میں جھگڑے پر مراد سعید اور جاوید لطیف دونوں قصوروار قرار

اسلام آباد: قومی اسمبلی کے اراکین مراد سعید اور جاوید لطیف میں جھگڑے کا معاملے پر تحقیقاتی کمیٹی نے اپنی رپورٹ اسپیکر اسمبلی کو پیش کردی ہے۔ کمیٹی نے جاوید لطیف کے ایوان پر آنے پر 8 دن جبکہ مراد سعید پر 2 دن کی پابندی لگانے کی سفارش کی ہے۔

ذرائع کے مطابق اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کی ہدایت پر بنائی گئی تحقیقاتی کمیٹی نے قومی اسمبلی کی راہداری میں تحریک انصاف کے رکن مراد سعید اور مسلم لیگ ن کے رکن جاوید لطیف کے درمیان ہونے والی جھگڑے میں دونوں کو قصور وار قرار دیا ہے۔

اپنی رپورٹ میں کمیٹی نے سفارش کی ہے کہ جاوید لطیف پر 8 دن جبکہ مراد سعید پر 2 دن کے لیے ایوان میں آنے پر پابندی لگائی جائے۔ تحقیقاتی کمیٹی نے اپنی رپورٹ اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کو پیش کردی ہے جو اس فیصلے کا حتمی اعلان کریں گے۔

واضح رہے کہ چند روز قبل ن لیگ کے رکن اسمبلی جاوید لطیف نے قومی اسمبلی کے اجلاس میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کو غدار کہا جس پر تحریک انصاف نے شدید احتجاج کیا۔

اجلاس ملتوی ہونے کے بعد اراکین ایوان سے باہر آئے تو مراد سعید اور جاوید لطیف میں زبانی جھڑپ ہوگئی جو بڑھ کر ہاتھا پائی تک جا پہنچی۔ اس دوران جاوید لطیف نے مراد سعید کے خلاف نازیبا زبان بھی استعمال کی۔

بعد ازاں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کو ایسی تقریبات میں شرکت سے گریز کی ہدایت کردی تھی جہاں جاوید لطیف کو مدعو کیا گیا ہو۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ کسی بھی مہذب معاشرے میں ایسی غیر اخلاقی حرکات کرنے والے افراد پر عوامی اجتماعات میں آنے پر پابندی لگا دی جاتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top