site
stats
پاکستان

لاہورہائی کورٹ میں ’کوہِ نورکی واپسی‘ کے لئے درخواست دائر

لاہور: لاہورہائی کورٹ میں دنیا کے سب سے بڑے ہیروں میں شمار ہونے والےکوہِ نورہیرے کی برطانیہ سے واپسی کے لیے درخواست دائرکردی گئی۔

برطانوی خبررساں ادارے کے مطابق یہ درخواست بیرسٹرجاوید اقبال جعفری نے دائر کی ہے جس میں ملکہ برطانیہ، برطانوی ہائی کمیشن وفاقی حکومت اورحکومت پنجاب کو فریق بنایا گیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ عدالت وفاقی حکومت کو دولت مشترکہ کی سربراہ ہونے کی حیثیت سے ملکہ برطانیہ کا عہد حکومت ختم ہونے پر کوہ نور ہیرا لاہور منتقل کرنے کی درخواست کرنے کے احکامات دے۔

کوہ نور ہیرا تحفے کے طورپر برطانیہ کی ملکہ کو سونپا گیا اورملکہ کے تاج میں جڑا گیا۔

ایک زمانے میں دنیا کے سب سے بڑے ہیروں میں شمار ہونے والا کوہ نور اب صرف 105 قیراط کا ہی رہ گیا ہے۔

خیال رہے کہ105 کیرٹ کے کوہِ نور ہیرے کو19ویں صدی میں اس وقت برطانیہ لے جایا گیا تھا جب برصغیر پر برطانیہ کا قبضہ تھا۔ اس ہیرے کی واپسی کا دعویٰ پاکستان اور بھارت دونوں کی جانب سے کیا جا چکا ہے۔

تاہم برطانیہ کے وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے سنہ 2013 میں اپنے دورہ بھارت میں واضح کر دیا تھا کہ کوہِ نور ہیرا واپس نہیں کیا جائے گا۔

روئٹرز کے مطابق پاکستان کی عدالت میں درخواست کرنے والے بیرسٹر جاوید اقبال جعفری کی درخواست ابھی سماعت کے لیے منظور نہیں کی گئی۔ ان کا موقف ہے کہ یہ ہیرا پاکستان کے صوبہ پنجاب کا ہے اور اسے مقامی حکمرانوں سے ناجائز دباؤ کے ساتھ زبردستی برطانیہ لے جایا گیا تھا۔

بتایا گیا ہے کہ اقبال جعفری اب تک اس ہیرے کی واپسی کے لیے 786 خطوط پاکستانی حکام اور ملکہ الزبتھ کو لکھ چکے ہیں۔ اپنی پٹیشن میں انھوں نے بتایا کہ اب تک ان کا ایک ہی خط ملکہ برطانیہ کو پرنسپل سیکریٹری کے ذریعے موصول ہو سکا ہے۔

واضح رہے کہ مہاتما گاندھی کے پوتے سمیت بھارت کی کئی اہم شخصیات برطانیہ سے کئی بار یہ مطالبہ کر چکی ہیں کہ وہ کوہِ نور ہیرا بھارت کو واپس کرے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top