The news is by your side.

Advertisement

ایران نے امریکی صدر کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیے

تہران: ایران نےامریکی ڈرون حملے میں جنرل قاسم سلیمانی کےقتل پر ڈونلڈ ٹرمپ کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق تہران حکومت نے بغداد ایئرپورٹ پر امریکی ڈورن حملے میں جنرل قاسم سلیمانی کے قتل پر امریکی صدر سمیت دیگر دو درجن سے زائد افراد کے وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے انٹرپول سے ان افراد کی گرفتاری کے لیے مدد کی درخواست کردی۔

پراسیکیوٹر علی القاسمہر کا کہنا ہے کہ ایران نے 3 جنوری کو جنرل قاسم سلیمانی کے قتل پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سمیت 30 دیگر افراد کو ملوث قرار دیتے ہوئے قتل اور دہشتگردی کے چارجز عائد کیے ہیں۔

اگرچہ انہوں نے دیگر 30 افراد کے نام ظاہر نہیں لیکن انہوں نے واضح کیا کہ ٹرمپ کی مدت صدارت ختم ہونے کے بعد بھی ایران اس کیس پر قانونی چارہ جوئی جاری رکھے گا۔

القاسمہر کے حوالے سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ ایران نے ٹرمپ اور دیگر افراد کے لئے “ریڈ نوٹس” پیش کرنے کی درخواست کی تھی ، انٹرپول کے ذریعہ جاری کردہ اعلی سطح نوٹس میں درخواست کی گئی ہے کہ نامزد شخص کی جگہ اور گرفتاری کی جائے۔

ریڈ نوٹس کے تحت مقامی حکام اس ملک کی طرف سے گرفتاری کرتے ہیں جس نے درخواست کی تھی۔ نوٹس میں ممالک کو مشتبہ افراد کی گرفتاری یا ان کے حوالے کرنے پر مجبور نہیں کرسکتے ہیں لیکن وہ مشتبہ افراد کے سفر کو محدود کرسکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں