The news is by your side.

Advertisement

ایرانی وزیر خارجہ کی لیک آڈیو نے ہلچل مچادی

تہران: ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کی لیک آڈیو نے ہلچل مچادی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے تین گھنٹے کی آڈیو میں پاسداران انقلاب پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ فوج ملکی خارجہ پالیسی پر حاوی ہے، اسی نے ایران کو روس کی ایما پر شام کی جنگ میں دھکیلا ہے۔

جواد ظریف کا کہنا تھا کہ پاسداران انقلاب کے سابق سربراہ قاسم سلیمانی اکثر ان کے پاس اپنے مطالبات لے کر آیا کرتے تھے۔

ایرانی وزیر خارجہ کا آڈیو کلپ میں کہنا تھا کہ شام میں اسلحہ اور فوج پہنچانے کے لیے سویلین طیاروں کا استعمال کیا گیا۔

جواد ظریف ٹیپ میں یہ بھی کہتے ہیں کہ روسی وزیر خارجہ سرگئی لیوروف نے سنہ 2015 میں ایران کے روس سمیت چھ عالمی طاقتوں سے ہونے والے جوہری معاہدے کو روکنے کی ہر ممکن کوشش کی تھی۔ وہ الزام لگاتے ہیں کہ روس کبھی نہیں چاہتا تھا کہ ایران کے مغربی طاقتوں کے ساتھ تعلقات بہتر ہوں۔

دوسری جانب ایرانی وزارت خارجہ نے وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ جواد ظریف کے بیانات کو سیاق و سباق سے ہٹ کر پیش کیا جارہا ہے ضرورت پڑی تو پورا انٹرویو شائع کریں گے۔

یاد رہے کہ یہ آڈیو ٹیپ ایک ایسے وقت پر لیک ہوئی ہے جب ایران جوہری معاہدے پر دوبارہ عمل پیرا ہونے کے مقصد سے ویانا میں امریکا کے ساتھ بالواسطہ مذاکرات کر رہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں