The news is by your side.

Advertisement

کیا امریکا اور ایران کے درمیان مذاکرات ناممکن ہیں؟

تہران: ایران کی القدس فورسز کے سربراہ جنرل قاسم سلیمان نے بھی امریکا کے ساتھ مذاکرات کو ناممکن قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق ایرانی حکام پہلے ہی واضح کرچکے ہیں کہ امریکا اقتصادی پابندیوں کے جاری رہتے ہوئے ایران کے ساتھ مذاکرات نہیں کرسکتا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کا کہنا تھا کہ اقتصادی پابندیوں کے دباؤ میں ایرانی مذہبی اسٹیبلشمنٹ کسی صورت امریکا کے ساتھ مذاکرات نہیں کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ امریکا کی پالیسی ہے کہ وہ اپنی پابندیوں کے ذریعے ایران کو دبانا چاہتا ہے، ان کی یہ پالیسی ناکام رہے گی، ایران کبھی نہیں جھکے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ایسی صورت حال میں مذاکرات نہیں ہوسکتے، دباؤ کے ذریعے ایران کو مذاکرات کی میز پر نہیں لایا جاسکتا۔

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے نئی پاپندیوں کے بعد ایران نے بھی جوہری معاہدے سے انخلا کی دھمکی دی ہے۔

ایران کی جانب سے یہ عندیہ امریکی نئی پابندیوں کے ردعمل میں دیا گیا ہے، خیال رہے کہ امریکا نے ایران دوست ممالک کو ایرانی تیل کی خریداری کے لیے دیا گیا استثناء ختم کردیا ہے۔

ایران نے امریکا کو آبنائے ہرمز بند کرنے کی دھمکی دے دی

یاد رہے کہ امریکا نے ایران سے تیل درآمد کرنے والے ممالک چین، بھارت، اور ترکی سمیت 8 ممالک کو اقتصادی پابندیوں کے ضمن میں دی گئی استثنیٰ ختم کرنے کا اعلان کیا تھا جس پر ان ممالک نے بھی ایران سے تیل خریدنے پر معذرت کرلی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں