عراق کا فضائی حملے میں داعش کے سربراہ ابوبکر البغدادی کو نشانہ بنانے کا دعویٰ -
The news is by your side.

Advertisement

عراق کا فضائی حملے میں داعش کے سربراہ ابوبکر البغدادی کو نشانہ بنانے کا دعویٰ

بغداد: عراق نے دعویٰ کیا ہے کہ شامی سرحد کے نزدیک ایک فضائی حملے میں داعش کے سربراہ ابوبکر البغدادی کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

عراقی سیکیورٹی کےذرائع کا کہنا ہے کہ ابوبکرالبغدادی قافلے کی صورت میں کربلا کی جانب داعش کے اجلاس میں شرکت کے لئے جارہے تھے کہ ان پرحملہ کیا گیا۔

عراقی صوبہ کربلا دریائے فرات کے کنارے شام کی سرحد سے پانچ کلومیٹرکے فاصلے انبرصوبے کے ساتھ واقع ہے جہاں سنی شدت پسندوں کا تسلط ہے۔

عراقی وارمیڈیا سیل کے مطابق حملے کے بعد ابوبکرالبغدادی کو ایک گاڑی میں لے جایا گیا تاہم ان کی حالت کے بارے میں کچھ نہیں کہا جاسکتا۔

عراقی میڈیا سیل کا مزید کہنا ہے کہ داعش کی اجلاس گاہ کو بھی نشانہ بنایا گیا ہے جس میں داعش کےکئی سرکردہ رہنما مارے گئے ہیں اورکچھ زخمی ہیں۔

دوسری جانب واشنگٹن کے ملٹری حکام کا کہنا ہے کہ ان کے پاس اس واقعے سے متعلق کوئی اطلاع نہیں ہے۔

اگر اس حملے میں داعش کے سربراہ ابوبکر البغدادی واقعی مارے جاچکے ہیں تو شدت پسند جہادی تنظیم کے لئے یہ ایک بہت بڑا جھٹکا ہے اورعراقی سیکیورٹی فورسز کی بہت بڑی کامیابی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں