The news is by your side.

Advertisement

رکشہ چلانے پر مجبور پروفیشنل کیمرہ مین کو اے آر وائی نیوز نے نوکری کی پیشکش کردی

کراچی: حالات کی ستم ظریفی نے ایک پروفیشنل کیمرہ مین کو سڑکوں کی خاک چھاننے پر مجبور کردیا، اے آر وائی نیوز نے متاثرہ کیمرہ مین کو نوکری کی پیش کش کردی۔

تفصیلات کے مطابق ایک نجی چینل سے برطرف کیے جانے والے سفیر احمد نامی کیمرہ مین مجبورً آج کراچی کی سڑکوں پر رکشہ چلا کر اپنا اور اپنے بیوی بچوں کا پیٹ پال رہا ہے۔ اے آر وائی نیوز کے مارننگ شو باخبر سویرا میں گفتگو کرتے ہوئے متاثرہ کیمرہ مین آب دیدہ ہوگیا۔

سفیر احمد نے کہا کہ اس نے اپنی زندگی میں 20، 25 سال بحیثیت کیمرہ مین کام کیا، ہرمشکل حالات میں اپنی ذمے داری سے پیچھے نہیں ہٹا، طبیعت خراب ہوتے ہوئے بھی نائٹ شفٹ کیا کرتا تھا، اس کے باوجود چینل سے نکال دیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ نوکری نہ ہونے اور مشکل حالات کے باعث کئی مہینوں تک دال روٹی کھایا کرتے تھے، بعض اوقات پانی سے روٹی بھی کھانی پڑی، نوکری سے نکالے جانے کے بعد بہت سے چینل میں درخواست دی لیکن کسی ادارے نے اپنے پاس جگہ نہیں دی۔

کیمرہ مین نے کہا کہ نوکری سے برطرفی کے پانچ سال ہوچکے ہیں، کسی دوسرے چینل میں کام نہ ملنے پر میں نے رکشہ چلانے کا فیصلہ کیا، میری بیٹیاں میرے لیے بڑی نعمت ہیں جو ہمیشہ میرے ساتھ صبر کرتی رہیں۔

گفتگو کے دوران سفیر احمد کو اے آر وائی نیوز نے نوکری کی آفر کی جس پر کیمرہ مین نے چینل کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی بیوی بچوں سے مشورہ کرکے حتمی فیصلہ کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں