The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی تعمیر میں بےضابطگی کاانکشاف

وفاقی دارالحکومت میں بنے انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی تعمیر میں بے ضابطگیوں کا انکشاف ہوگیا، آڈٹ رپورٹ نے قومی خزانے کو نقصان پہنچانے سے متعلق حقائق سے پردہ اٹھا دیا۔

اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی تعمیر میں بے ضابطگی سے متعلق آڈٹ رپورٹ میں حقائق سامنے آگئے، رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ہوائی اڈے کے اے ٹی سی ٹاور کےلیے غلط سائٹ کا انتخاب کیا گیا۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ غلط سائٹ کے انتخاب سے قومی خزانے کو دو کروڑ دس لاکھ روپے کا نقصان ہوا۔

آڈٹ رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ ایئرٹریفک کنٹرول ٹاور کی عمارت اپنی تعمیر کا مقصد پورا نہیں کرتی تھی، اے ٹی سی ٹاور سے مرکزی ٹرمینل کے شمال مغرب میں کھڑے طیارے نظر ہی نہیں آتے تھے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ انہیں وجوہات کی بنا پر اے ٹی سی کےلیے علیحدہ معاہدے کے ذریعے ایک اور عمارت تعمیر کی گئی، نئی عمارت کی تعمیر، سامان کی ترسیل اور تنصیب سے دو کروڑ دس لاکھ کا اضافی خرچ ہوا، اور یہ نقصان بد انتظامی اور کمزور اندرونی کنٹرول کے باعث ہوا۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ اگست اور ستمبر 2020 میں نشاندہی کی گئی لیکن پراجیکٹ انتظامیہ نے جواب نہ دیا لیکن ذمے داروں کا تعین کرکے نقصان کو پورا کیا جائے۔

آڈٹ رپورٹ سے متعلق اے آر وائی نیوز کے نمائندے سے حکام سے بات کرنے کی کوشش تاہم معاملے پر حکام نے مؤقف دینے سے گریز کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں