The news is by your side.

Advertisement

67 کروڑ کے ٹھیکے، پی آئی اے کچن سروسز میں بے ضابطگیوں کا انکشاف

اسلام آباد : پی آئی اے کچن سروسز میں 67 کروڑ کے ٹھیکے میں بے ضابطگیوں کا انکشاف سامنے آیا ، بعض ارکان نے مطالبہ کیا ایف آئی اے کی حتمی رپورٹ پیش ہونےتک معاملہ موخرکیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق پی اےسی کا رانا تنویر حسین کی زیرصدارت اجلاس ہوا ، اجلاس میں ایوی ایشن ڈویژن کی آڈٹ رپورٹ 2008-09کا جائزہ لیا گیا۔

پی آئی اے کچن سروسز میں 67 کروڑ کے ٹھیکے میں بےضابطگیوں کا انکشاف ہوا، ایف آئی اے نے کہا نومبر2008میں انکوائری شروع ہوئی چند ماہ قبل اسے بند کر دیا گیا۔

بعض ارکان نے اعتراض کیا کہ پی اے سی نے آڈٹ پیرا نمٹا دیا، ایف آئی اےکی حتمی رپورٹ پیش ہونےتک معاملہ موخرکیاجائے۔

اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے کہا بولی کےعمل میں پانچ کمپنیوں نے حصہ لیا تھا، 2005 میں پی آئی اے کاعالمی معیار کاکچن نہیں تھا۔

ایف آئی اے کا کہنا تھا کہ کچن سروس بہترہونے سے کئی ممالک نے سروسز لینا شروع کیں، کچھ مسائل کی وجہ سے انتظامیہ کچن سروس کامعیار برقرار نہ رکھ سکی۔

چیئرمین پی آئی اے نے کہا ایف آئی اے میں انکوائری کاعمل بہت سست ہے، ڈھائی سال میں 2031 کیس تیارکیے آج تک صرف 3نمٹائے گئے، 2006 کاڈیٹا ہے اورمیں دوسروں کے گواہ دھونے آتا ہوں،آڈٹ والے بھی آسانی سے جان نہیں چھوڑتے، ایف آئی اے والے بار بار ریکارڈ اور ڈیٹا مانگتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں