The news is by your side.

Advertisement

عراق کے صوبے انبار میں فضائی حملہ، داعش کا کمانڈر ہلاک

واشنگٹن : عراق کے صوبہ انبار میں امریکی قیادت میں اتحادی فضائی حملے میں داعش کا کمانڈر اپنے تین ساتھیوں سمیت مارا گیا.

تفصیلات کے مطابق پینٹاگون کے ترجمان پیٹر کک کا کہنا تھا کہ 6 مئی کو عراق کے صوبے انبار میں فضائی حملہ کیا گیا جس میں داعش کا لیڈر ابو واہب اپنے تین ساتھیوں سمیت ماراگیا.

پیٹاگون کے ترجمان کے پیٹرکک کےمطابق ابوواہب عراق میں القاعدہ کا سابق رکن تھا، جس نے بعد میں داعش میں شمولیت اختیار کرلی تھی، داعش کے کمانڈر کو متعدد ویڈیوز میں بھی دیکھا گیا تھا جس میں لوگوں کو قتل کیا جارہا تھا.

انہوں نے کہا کہ ابو واہب صرف صوبہ انبار کا ہی لیڈر نہیں تھا بلکہ یہ داعش کی اہم قیادت میں سے تھا، داعش کے لیڈر کا حملے میں مارا جانا ایک بڑی کامیابی ہے.

داعش کا کمانڈر اپنے ساتھیوں سمیت گاڑی میں جارہا تھا اسی دوران اس کو نشانہ بنایا گیا تاہم پیٹاگون کے ترجمان نے اس بات کی وضاحت نہیں کی کہ اسے جنگی جہاز یا ڈرون سے نشانا بنایا گیا.

ابو واہب کاقتل امریکہ کی جانب سے کی جانے والے فضائی حملوں میں ہوا، امریکہ کی جانب سے اب تک عراق اور شام میں متعدد فضائی حملوں میں داعش کے لیڈرز کو نشانہ بنایاجاچکاہے ، لیکن اب بھی داعش کے قبضے میں عراق اور شام کا ایک بڑا حصہ ہے، امریکہ کی جانب سے داعش کے خلاف فضائی حملوں کا آغاز آگست 2014 سے کیا گیا تھا.

امریکی فضائی حملوں میں اب تک داعش کےسینئر لیڈرز کو نشانہ بنایا جاچکاہے جن میں سلیمان عبد شبیب داعش کا جنگی کونسل کا رکن، عبدالرحمن مصطفی،عمر چیچن جو داعش کے وزیر دفاع کےطور جاناجاتا تھا.

امریکی اسپیشل فورس کی جانب سے فروری میں کئے جانے والے آپریشن میں داؤد سلیمان جو کیمیائی ہتھیاروں کےماہر کے طور پر جانا جاتا ہے اسے گرفتار کیاگیا تھا.

بعداد فوج کے ترجمان کرنل اسٹیو کا کہنا تھا کہ 2015 کے آغاز سے اب تک 40 لوگوں کو نشانہ بنایا جاچکا ہے جس میں داعش اور القاعدہ کے سہولت کار، سیل رہنما اور منصوبہ ساز شامل ہیں.

امریکی کاروائیوں میں بڑا نقصان پہچانے کے باوجود داعش نے اب بھی عراق کے شہر موصل اور شام کے شہر رقہ پر قبضہ کیا ہوا ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں