The news is by your side.

Advertisement

وزیرخزانہ اسحاق ڈارنے فردجرم عائدکرنے کے فیصلے کوچیلنج کردیا

اسلام آباد : وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے فردجرم عائد کرنے کے فیصلے کو چیلنج کردیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے فردجرم عائد کرنے کے فیصلے کیخلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست دائر کردی، درخواست خواجہ حارث کے ذریعے دائرکی گئی۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ 27 ستمبرکےحکم نامہ میں قانونی تقاضے پورے نہیں کیئے، 27 ستمبرکے حکم کو دوبارہ دیکھا جائے۔

دائر درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ فردِ جرم عائد کرنے کے فیصلے پر نظر ثانی کی جائے۔

درخواست میں چیئرمین نیب اوراحتساب عدالت کوفریق بنایا گیا ہے۔


مزید پڑھیں : وزیرخزانہ اسحاق ڈار پرفرد جرم عائد


یاد رہے کہ 27 ستمبر کو احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثوں کے نیب ریفرنس میں وزیرخزانہ اسحاق ڈارپرفرد جرم عائد کی تھی تاہم اسحاق ڈار نے صحت جرم سے انکار کردیا تھا۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ عدالت میں اپنی بے گناہی ثابت کروں گا اورالزامات کا دفاع کروں گا۔

دوسری جانب اسحاق ڈار کے تمام بینک اکاؤنٹس منجمد کردیئے گئے تھے اور تمام جائیداد کی خرید و فروخت اور منتقلی پر پابندی عائد کردی تھی۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل نیب کی سربراہی میں نیب پراسیکیوشن ونگ نے سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے بچوں ، داماد اور اسحاق ڈار کے خلاف احتساب عدالت میں ریفرنسزدائرکیے تھے۔قومی احتساب بیورو کی ٹیم نے شریف خاندان کے خلاف 3 اور وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف 1 ریفرنس دائر کیا تھا۔

وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف سیکشن 14 سی لگائی گئی ہے ‘جو آمدن سے زائد اثاثے رکھنے سے متعلق ہے۔ نیب کی دفعہ 14 سی کی سزا 14 سال مقرر ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں