وزیرخزانہ اسحاق ڈار چھٹی بار احتساب عدالت میں پیش ‌، وکیل غائب ، سماعت ملتوی
The news is by your side.

Advertisement

وزیرخزانہ اسحاق ڈار چھٹی بار احتساب عدالت میں پیش ‌، وکیل غائب ، سماعت ملتوی

اسلام آباد : وزیرخزانہ اسحاق ڈار چھٹی بار احتساب عدالت میں پیش ہوگئے لیکن اسحاق ڈار کے وکیل خواجہ حارث پیش نہ ہوسکے ، جس کے بعد سماعت 23 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار کیخلاف آمدن سےزائد اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت جاری ہے ، ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کررہےہیں، وزیرخزانہ اسحاق ڈار چھٹی بار احتساب عدالت میں پیش ہوگئے لیکن اسحاق ڈار کے وکیل خواجہ حارث عدالت میں پیش نہیں ہوئے۔

سماعت میں جونیئر وکیل کا کہنا تھا کہ خواجہ حارث کو اچانک بیرون ملک جانا پڑا ہے ، گواہ کا بیان ریکارڈ کر لیں،جرح خواجہ حارث کے آنے پر کی جائے، جس پر جج محمد بشیر کا کہنا تھا کہ بیان ریکارڈ کرانےکی ہدایت ہے تو جرح بھی آپ کرلیں۔

احتساب عدالت کےجج کا استفسار کیا کب تک خواجہ حارث واپس آئیں گے، معاون وکیل نے جواب میں کہا کہ خواجہ حارث آئندہ بدھ تک واپس آ جائیں گے۔

نیب پراسیکیوٹر مومنہ ایڈووکیٹ نے اپنے دالائل میں کہا کہ اسحاق ڈار کو جیل بھیجیں،وکیل خود آ جائےگا، یہ عدالت کا احترام نہیں کر رہے، گواہ ملااز مت کرتے ہیں، ملزم کو پوچھ لیں وکیل رکھنا ہے یا تبدیل کرناہے،  جمعہ کے لئے سماعت رکھ لیں، بیان ریکارڈ کرنے کے لئے تیار ہیں، ہم وقت ضائع نہیں کرناچاہتے۔

سماعت میں اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ وکیل صاحب نے کہا وہ خود جرح کریں گے، خواجہ حارث ذمہ دار آدمی ہیں، براہ راست بات نہیں ہوئی، کل شام تک یہی تھا کہ خواجہ حارث عدالت آئیں گے، آج صبح پتہ چلا خواجہ حارث بیرون ملک ہیں، خواجہ حارث کو اچانک بیرون ملک جانا پڑا، آپ کا شکر گزار ہوں گا درخواست منظورکرلیں۔

احتساب عدالت نے کہا کہ خواجہ حارث سے رابطہ کرکے بتایا جائے، ضلعی انتظامیہ کی جانب سے خط ملاہے، وکلا کو آنے دیا جائے یانہیں،یہ فیصلہ کریں، 50 افراد کمرہ عدالت میں آسکتے ہیں، ناموں کی فہرست جمع کرا دی جائے، پہلے بھی وکلا کے ساتھ واقعہ ہو چکا ہے۔

بعد ازاں اسحاق ڈارکیخلاف آمدن سے زائداثاثہ جات ریفرنس کی سماعت 23اکتوبرتک ملتوی کردی گئی۔

گذشتہ سماعت میں  اسحاق ڈار کے جانب سے اکاؤنٹس کی تفصیلات جمع کروائی گئیں تھیں اور استغاثہ کے دو گواہان طارق جاوید اور شاہد عزیز نے عدالت کے سامنے اپنے بیانات قلمبند کروائے تھے۔


مزید پڑھیں : وزیرخزانہ اسحاق ڈار پرفرد جرم عائد


یاد رہے کہ احتساب عدالت نے 27 ستمبر کو آمدن سے زائد اثاثوں کے نیب ریفرنس میں وزیر خزانہ اسحٰق ڈار پر فرد جرم عائد کی تھی تاہم اسحٰق ڈار نے صحت جرم سے انکار کردیا تھا۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل نیب کی سربراہی میں نیب پراسیکیوشن ونگ نے سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے بچوں ، داماد اور اسحاق ڈار کے خلاف احتساب عدالت میں ریفرنسزدائرکیے تھے۔قومی احتساب بیورو کی ٹیم نے شریف خاندان کے خلاف 3 اور وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف 1 ریفرنس دائر کیا تھا۔

وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف سیکشن 14 سی لگائی گئی ہے ‘جو آمدن سے زائد اثاثے رکھنے سے متعلق ہے۔ نیب کی دفعہ 14 سی کی سزا 14 سال مقرر ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں