The news is by your side.

Advertisement

اسحاق ڈارکوحاضری سےاستثنیٰ نہیں دیا گیا‘ طارق فضل چوہدری

اسلام آباد : وزیرمملکت برائےکیڈ ڈاکٹرطارق فضل چوہدری کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ ن کی قیادت عدالتوں کا سامنا کررہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے وزیرمملکت برائےکیڈ ڈاکٹر طارق فضل چوہدری کا کہنا تھا کہ 48 گھنٹے میں فرد جرم عائد نہیں کی جاسکتی ہے۔

طارق فضل چوہدری کا کہنا تھا کہ اسحاق ڈار پر فردجرم عائد کی گئی ہے جبکہ وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف ریفرنس کی سماعت 4 اکتوبرتک ملتوی کردی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیرخزانہ اسحاق ڈار کی استدعا کو نہیں سنا گیا اور عدالتوں کے فیصلوں کو ریفرنس کے طور پر پیش کیا گیا۔

وزیرمملکت برائےکیڈ کا کہنا تھا کہ 4 اکتوبر کو گواہان کو طلب کیا گیا ہے،انہوں نے کہا کہ کل 28 گواہان ہیں اگلی پیشی پر2 گواہان کو طلب کیا گیا ہے جن کا تعلق لاہور سے ہے اوردونوں بینک کے افسران ہیں۔

طارق فضل چوہدری کا کہنا تھا کہ وزیرخزانہ اسحاق ڈار کو حاضری سے استثنیٰ نہیں دیا گیا۔


وزیرخزانہ اسحاق ڈار پرفرد جرم عائد


خیال رہے کہ آج احتساب عدالت کی جانب سے آمدن سے زائد اثاثوں کے نیب ریفرنس میں وزیرخزانہ اسحاق ڈار پرفرد جرم عائد کردی گئی تاہم اسحاق ڈار نے صحت جرم سے انکار کردیا۔


نوازشریف پرفرد جرم 2 اکتوبرکوعائد کی جائے گی


واضح رہے کہ گزشتہ روزسابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف پر فرد جرم عائد کرنے کے لیےاحتساب عدالت نے 2 اکتوبر کی تاریخ دی تھی جبکہ حسن، حسین اور مریم نواز کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں گرفتار کرکے 2 اکتوبرکو پیش کیا جائے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں