وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا ٹرسٹ اور فاؤنڈیشن پاکستان میں کہیں رجسٹرڈ نہیںDar
The news is by your side.

Advertisement

وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا ٹرسٹ اور فاؤنڈیشن پاکستان میں کہیں رجسٹرڈ نہیں

اسلام آباد : وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی نان پرافٹ آرگنائزیشن پاکستان میں کہیں رجسٹر ہی نہیں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر کو ٹیکس دینے کا درس دینے والے اسحاق ڈار کا ٹرسٹ اور فاؤنڈیشن ایس ای سی پی میں پاکستان میں رجسٹر ہی نہیں ہے، ایس ای سی پی کی ویب سائٹ میں ان دونوں کمپنوں کا کوئی نام ہی نہیں ہے۔

دونوں کمپنیاں نان پرافٹ آر گنائزشنز ہیں، اس کے باوجود پاکستان سینٹر آف فیلینتھراپی سے ان کا سرٹیفیکیٹ سال دوہزار آٹھ کے میں ایکسپائر ہو چکا ہے۔

زرائع کے مطابق بیت المال پنجاب میں بھی یہ دو کمپنیاں ریجسٹر نہیں ہیں، ہجویری ٹرسٹ اور فاؤنڈیشن کو وزیر خزانہ اسحاق ڈار خود فنڈ کرتے ہیں اور اپنی تنخواہ بھی اسی فاؤنڈیشن اور ٹرسٹ کو عطیہ کرتے ہیں۔


مزید پڑھیں : وزیرخزانہ اسحاق ڈار پرفرد جرم عائد


ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹیکس چوری اور ا ثاثے چھپانے کیلئے ٹرسٹ اور فلاحی ادارے بنانا عام سی بات ہے اور وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے معاملے میں یہ بات صاف ظاہر ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان میں این جی اوز ،نان پرافٹ آرگنائزیشنز کیلئے لائسنس ضروری ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ روز احتساب عدالت نےآمدن سے زائد اثاثوں کے نیب ریفرنس میں وفاقی وزیرخزانہ اسحاق ڈار پر فرد جرم عائد کی تھی، تاہم اسحاق ڈار نے صحت جرم سے انکار کیا تھا۔

زیرخزانہ اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ میرے تمام اثاثے آمدن سے مطابقت رکھتے ہیں جبکہ مجھ پرعائد الزامات بے بنیاد ہیں جنہیں عدالت میں ثبوتوں کے ذریعے ثابت کروں گا۔

اس سے قبل احتساب عدالت کی جانب سے وزیر خزانہ اسحق ڈار کے تمام بینک اکاؤنٹس منجمد کردیئے گئے تھے جب کہ ان کی تمام جائیداد کی خرید و فروخت اور منتقلی پر پابندی عائد کردی تھی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں