The news is by your side.

Advertisement

اسلام امن کا مذہب ہے، دہشت گردی کا تاثر ختم کرنا ہوگا، بلاول

واشگنٹن: بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے اسلام امن کا مذہب ہے دہشتگردی سے تعلق کا تاثر ختم کرنا ہوگا، معاشرے میں بڑھتی ہوئی عدم برداشت کی وجہ اسلام کے بارے میں غلط تاثرات ہیں، پی پی نے اقلیتی رہنماؤں کو حکومت میں شامل کیا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے وائس آف امریکا کو دئیے گئے انٹرویو میں کیا۔ بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ میں پاکستان کا واحد سیاستدان ہوں جس نے اقلیتی رہنماؤں کو حکومت میں شامل کیا، سیاست میں ناممکن کو ممکن بنانے کا طریقہ موجود ہے۔

قبل ازیں بلاول بھٹو نے واشگنٹن میں امریکی تھنک ٹینک یو ایس آئی پی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ بلاول بھٹو نے نواز حکومت پر تنقید کی اور کہا کہ وزیراعظم نہ خود پارلیمنٹ میں آتے اور نہ ہی وزراء کی غیر حاضری پر اُن سے جواب طلب کرتے ہیں، نوازحکومت نے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے جموریت اور عوام کے لیے کچھ نہیں کیا۔

پی پی کے چیئرمین نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت انسداد دہشت گردی سمیت دیگر اہم چیلنجز سے نمٹنے میں ناکام ہوچکی ہے، وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان اچھے اور برے طالبان کی پالیسی اپنائے ہوئے ہیں۔

کشمیر کے معاملے پر بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ کشمیر کے مسئلے کی وجہ سے جنوبی ایشیا پر آج بھی جوہری جنگ کی تلوار لٹک رہی ہے۔ ایک سوال کے جواب میں بلاول بھٹو نے کہا کہ پاکستان سے کرپشن کے خاتمے کے لیے نوجوان قیادت کو سامنے آنا ہوگا۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ گزشتہ انتخابات میں طالبان اور دیگر دہشت گرد تنظیموں نے پیپلز پارٹی کو انتخابی مہم نہیں چلانے دی، آئندہ انتخابات میں پیپلز پارٹی بہتر نتائج سامنے لائے گی۔ صوبہ سندھ میں معاشی ترقی اور بنیادی سہولیات لوگوں کو فراہم کرنے کی کوششں کی جارہی ہیں۔

اس موقع پر بلاول بھٹو نے پاک امریکہ تعلقات ، افغانستان اور دہشت گردی کے چیلنجز پر بھی بات کی، بلاول کے ہمراہ بختاور بھٹو ، شیری رحمن اور سابق سینیٹر خواجہ اکبر بھی موجود تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں