The news is by your side.

Advertisement

عدالت نے سنتھیا رچی کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دے دیا

اسلام آباد: مقامی عدالت نے ایف آئی اے کو امریکی شہری سنتھیا رچی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق اسلام آباد کی عدالت نے سنتھیا رچی کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دے دیا ہے، ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج جہانگیر اعوان نے ہفتے کو دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا تھا جو آج سنایا گیا۔

پی پی رہنما شکیل عباسی نے ایف آئی اے کے مقدمہ درج نہ کرنے پر عدالت سے رجوع کیا تھا۔

عدالت نے ایف آئی اے کو نوٹس جاری کر کے جواب طلب کیا تھا، فاضل جج نے ایف آئی اے کی درخواست مسترد کر کے مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا، پی پی رہنما نے بے نظیر شہید پر الزام لگانے پر مقدمے کی درخواست کی تھی، جب کہ ایف آئی اے نے عدالت سے اندراج مقدمہ کی درخواست خارج کرنے کی استدعا کی تھی۔

امریکی بلاگر سنتھیا رچی کو عدالت نے طلب کرلیا

دو صفحات پر مشتمل تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ سنتھیا رچی نے سوشل میڈیا پر بے نظیر بھٹو سے متعلق ٹوئٹ سے انکار نہیں کیا، انسداد الیکٹرانک کرائم ایکٹ کے تحت جرم کا ارتکاب ہوا ہے، اس لیے ایف آئی اے قانون کے مطابق تفتیش کرے، یہ عدالت درخواست منظور کرتی ہے، ایف آئی اے شواہد ملنے پر ایف آئی آر درج کرے، بے نظیر بھٹو سابق وزیر اعظم اور لاکھوں لوگوں کی قائد تھیں، ان کے چاہنے والوں میں سے کسی کو بھی فریق لیا جا سکتا ہے، پیکا ایکٹ کی تشریح کے مطابق بے نظیر بھٹو کی پارٹی کا ضلعی صدر بھی فریق ہے، محترمہ بے نظیر بھٹو کو شہید ہوئے 12 سال سے زائد کا عرصہ گزر چکا لیکن سنتھیا رچی نے اتنے سال تک کسی متعلقہ فورم یا میڈیا پر الزامات کا اظہار نہیں کیا، شہید قائد کو بدنام کرنے کے لیے الزامات لگانا بادی النظر میں بدنیتی پر مبنی ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان میں مقیم امریکی شہری سنتھیا ڈی رچی نے سابق وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک، سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی اور پی پی رہنما مخدوم شہاب الدین پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ رحمان ملک نے 2011 میں ان سے اس وقت زیادتی کی جب وہ وزیر داخلہ تھے۔

سنتھیا رچی نے الزام عائد کیا تھا کہ سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے ایوان صدر میں ان سے دست درازی کی جب کہ سابق وزیر صحت مخدوم شہباب الدین پر بھی بدسلوکی کا الزام عائد کیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں