The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد ہائیکورٹ حملہ کیس، جے آئی ٹی نے تحقیقات کا آغاز کردیا

اسلام آباد ہائی کورٹ حملہ کیس میں مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی نےآغاز کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق جےآئی ٹی کے پہلے اجلاس میں حساس اداروں اور پولیس افسران نے شرکت ‏کی جس میں ہائیکورٹ پر دھاوا بولنے والوں کی فوٹیج کا جائزہ لیا گیا۔

ہائیکورٹ کےسیکیورٹی انچارج کابیان بھی قلمبندکر لیا گیا جب کہ جےآئی ٹی حملےمیں ملوث اصل ‏کرداروں کاتعین اور گرفتار کرے گی۔

جےآئی ٹی بار عہدیداران سےبھی ملاقات کرےگی اور مختلف پہلوؤں کا جائرہ لے کر رپورٹ مرتب ‏کرے گی۔جےآئی ٹی میں آئی ایس آئی،آئی بی،ایم آئی،پولیس نمائندےشامل ہیں جبکہ جےآئی ٹی اسلام ‏آبادہائیکورٹ اور ڈسٹرکٹ بارز سے بھی مدد لے سکے گی۔

یاد رہے اسلام آباد پولیس نے ہائی کورٹ حملہ معاملے پر جے آئی ٹی بنانے کا فیصلہ کیا تھا ،چیف ‏جسٹس کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی بار کے صدور سے بات کرلیں ، وہ خود نشاندہی کریں گے، جو ‏معاملے میں ملوث تھے آٹھ دس کے علاوہ دیگر کی نشاندہی بار کرے۔

جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس میں کہا تھا چیف کمشنر اسلام آباد متعلقہ بارز کوتحریری طور ‏پیش رفت سےآگاہ کریں، کوئی قانون سےبالا نہیں، 8فروری کا واقعہ ناقابل برداشت ہے، کسی ‏معصوم یا بے گناہ وکیل کوہراساں نہ کیا جائے۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی ملوث عناصر کی نشاندہی کے لیے ڈسٹرکٹ بارز سے ‏معاونت لے، بارز پہلے دن معاونت کرتیں تو بے گناہ وکلا کوہراساں کرنے کے واقعات نہ ہوتے، جو ‏لوگ واقعہ میں ملوث ہیں انہیں بھی فیئر ٹرائل کا موقع ملنا چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں