لیڈی کانسٹیبل سے زیادتی: پولیس نے حساس اداروں سے مدد مانگ لی -
The news is by your side.

Advertisement

لیڈی کانسٹیبل سے زیادتی: پولیس نے حساس اداروں سے مدد مانگ لی

اسلام آباد: لیڈی کانسٹیبل سے نا معلوم افراد کی زیادتی کا معاملہ پیچیدگی اختیار کر گیا، پولیس نے حساس اداروں سے وسیع پیمانے پر تحقیقات کے لیے مدد مانگ لی۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ رات لیڈی کانسٹیبل کو ہائی وے سے ملزمان نے منہ پر کپڑا رکھ کر بے ہوش کیا تھا، ملزمان لیڈی کانسٹیبل کو حالت غیر ہونے پر اندھیرے میں چھوڑ کر فرار ہوگئے تھے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ خاتون کانسٹیبل سے زیادتی کرنے والے 2 افراد تھے، خاتون کانسٹیبل کی سرکاری گن بھی اس کے قریب سے ہی مل گئی تھی۔

پولیس نے واقعے کی تحقیقات کرتے ہوئے سروس روڈ پر نجی بینک و دیگر اہم عمارتوں سے فوٹیج حاصل کر لی، لیڈی کانسٹیبل کو رات ڈیڑھ بجے پولی کلینک لیبر روم منتقل کیا گیا تھا۔


یہ بھی پڑھیں:  دیر میں پہلی بارخاتون ہیڈ کانسٹیبل کی بطور محرر تعیناتی


اسپتال حکام نے میڈیا کو ابتدائی ٹیسٹ اور علاج کی تفصیل دینے سے انکار کر دیا ہے، وارڈ ماسٹر جبار نے کہا کہ سینئر ڈاکٹرز کی غیر موجودگی میں کوئی انفارمیشن نہیں دے سکتے۔

پولیس کے مطابق گزشتہ رات لیڈی پولیس کانسٹیبل گھر جارہی تھی کہ ہائی وے کے قریب سے اسلحہ کی نوک پر نامعلوم ملزمان نے اس کے ساتھ زیادتی کی۔ پولیس واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے تاہم ملزمان تک نہیں پہنچ سکی، جس پر پولیس نے حساس اداروں سے مدد طلب کر لی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں