افغان حکام کے رویے سے لگتا ہے، طاہر داوڑ کا قتل صرف دہشت گرد تنظیم کا کام نہیں: آئی ایس پی آر
The news is by your side.

Advertisement

افغان رویے سے لگتا ہے، طاہر داوڑ کا قتل صرف دہشت گرد تنظیم کا کام نہیں: پاک فوج

راولپنڈی: ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ افغان حکام کے رویے سے لگتا ہے، طاہر  داوڑ کا قتل صرف دہشت گرد تنظیم کا کام نہیں.

ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق افغانستان میں ایس پی طاہر داوڑ کا بہیمانہ قتل قابل مذمت ہے، ایس پی طاہرداوڑ کی صورت میں ایک بہادر پولیس افسر سے محروم ہوگئے.

میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ طاہرداوڑ کا اغوا، افغان حکام کےمؤقف نے کئی سوالوں کوجنم دیا، افغانستان کے رویے سے لگتا ہے کہ معاملہ صرف دہشت گرد تنظیم کا کام نہیں.

ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق اس بات کا اعادہ کرتے ہیں کہ افغان فورسزسرحدی باڑ، بہترسیکیورٹی کے لئے تعاون کریں گے.


مزید پڑھیں: ایس پی طاہر داوڑ کا جسد خاکی پاکستان کے حوالے، میت پشاورروانہ

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ افغان سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہ ہو، اس کے لئے سیکیورٹی تعاون بڑھایا جائے، بہتراقدامات سے افغان سرزمین کو پاکستان کے خلاف استعمال ہونے سے روکا جاسکتا ہے.

میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ طاہرداوڑ کا قتل اور بعد کی صورت حال سے لگتا ہے کہ کئی قوتیں ملوث ہیں.

یاد رہے کہ آج افغان حکام نے مذاکرات کے بعد طاہر داوڑ کی میت پاکستانی حکام کے حوالے کی تھی، جسے پشاور روانہ کردیا گیا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں