The news is by your side.

Advertisement

غزہ : اسرائیلی فضائیہ کی حماس کے ٹھکانوں پر بمباری

غزہ : اسرائیلی فضائیہ کی جانب سے گزشتہ شب مقبوضہ غزہ میں اسلامی مزاحمتی تنظیم حماس کے ٹھکانوں پر شدید بمباری کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق غاصب صیہونی ریاست اسرائیل کے ظالم فوجیوں کی جانب سے اتوار اور پیر کی درمیانی شب مقبوضہ فلسطین کے شہر غزہ کی پٹی میں واقع اسلامی مزاحمتی تنظیم حماس کے متعدد ٹھکانوں پر فضائی بمباری کی گئی ہے تاہم اسرائیل کی فضائی کارروائی کے دوران کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

اسرائیلی فورسز کے ترجمان کا کہنا ہے کہ گزشتہ شب کی جانے والی کارروائی فلسطینیوں کی جانب سے اسرائیلی سرحد پر کیے جانے والے احتجاجی مظاہرے کے نتیجے میں کی گئی تھی۔

دوسری جانب فلسطینی وزارت صحت کا کہنا تھا کہ اسرائیلی بمباری میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم جمعے کے روز احتجاجی مطاہرے کے دوران اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا نوجوان زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے زخمی ہوگیا۔

اسرائیلی فورسز نے بیان میں کہا ہے کہ احتجاج کے دوران فلسطینیوں شہریوں کی جانب سے سرحدی باڑ پر دھماکا خیز مواد پھینکا گیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ فلسطینیوں نے متعدد دھماکا خیز ڈیوائسز سرحدی باڑ پر پھینکی تھی جس کے جواب میں اسرائیلی فورسز نے غزہ کے شمالی حصّے میں حماس کے ٹھکانوں پر فضائی کارروائی کی ہے۔

مزید پڑھیں : مقبوضہ غزہ میں اسرائیلی فورسز کی بے دریغ‌ فائرنگ، 2 فلسطینی نوجوان شہید

یاد رہے کہ  اسرائیلی فورسز نے صیہونی ریاست کے ظلم و بربریت کے خلاف احتجاج کرنے والوں پر فائرنگ کرکے دو فلسطینی نوجوانوں کو شہید جبکہ درجنوں کو زخمی کردیا۔

مزید پڑھیں : اسرائیلی فورسز کی نہتے فلسطینیوں پر فائرنگ، دو نوجوان شہید

غاضب صیہونی ریاست کے خلاف ہر جمعے فلسطینی غزہ بارڈر پر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہیں، یہ سلسلہ گذشتہ سال 30 مارچ سے چلا آرہا ہے۔

ایک محتاط اندازے کے مطابق ہفتہ وار احتجاجی مظاہروں کے دوران اب تک اسرائیلی فوج 300 سے زائد فلسطینیوں کو شہید کرچکی ہے، جبکہ ہزاروں زخمی بھی ہوئے۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال نو فروری کو صیہونی فوج کی فائرنگ سے 14 سالہ حسن ایاد شلبی سینے میں گولی لگنے کے باعث موقع پر ہی شہید ہوگیا تھا جبکہ 17 سالا حمزہ محمد اشتوی کو شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں