اسرائیلی فوجیوں کو تھپڑ رسید کرنے والی فلسطینی خواتین عدالت میں پیش Palestine
The news is by your side.

Advertisement

اسرائیلی فوجیوں کو تھپڑ رسید کرنے والی فلسطینی خواتین عدالت میں پیش

غزہ : قابض اسرائیلی فوجیوں کو تھپڑ رسید کرنے والی دو فلسطینی خواتین عدالت میں پیش جب کہ ان کے کزن 15 سالہ احد کو 25 دسمبر تک لیے ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی عدالت میں پیش کی جانے والی خواتین نریمان تمیمی اور نور ناجی کا تعلق مقبوضہ فلسطین کے مغربی کنارے پر واقع گاؤں نبی صالح سے ہے۔

دونوں خواتین پر الزام ہے کہ گزشتہ روز انہوں نے ایک مظاہرے کے دوران اسرائیلی سپاہیوں کے سامنے مزاحمت کرتے ہوئے فوجیوں کو تھپڑ رسید کردیئے تھے۔

دوسری جانب خواتین کے ہمراہ حراست میں لیے گئے نوجوان احد تمیمی کو اسرائیلی فوجیوں سے مزاحمت، سیکیورٹی ایریا کو نقصان پہنچانے اور اشتعال انگیزی کی دفعات لگا کر 25 دسمبر تک کے لیے جیل بھیج دیا گیا ہے۔

یاد رہے تمیمی خاندان اسرائیل کے مظاہروں کا لازمی حصہ ہوتے ہیں اور فلسطینی زمینوں پر یہودیوں کی آبادکاری کے لیے کیے گئے اسرائیلی آپریشن کے دوران سخت مزاحمت کرتے آئے ہیں اور ان کے خاندان کے 15 سالہ نوجون کے سر پر ربڑ کی گولی بھی ماری گئی تھی۔

گاؤں بنی صالح کے رہائشیوں کا کہنا ہے کہ اسرائیلی فوج انہیں بیدخل کر کے یہودیوں کی آباد کاری کر رہے ہیں جسے کسی طور پر قبول نہیں کیا جا سکتا جس کے لیے مقامی افراد مظاہرہ کر رہے تھے کہ کچھ خواتین اور ایک فوٹو گرافر کو حراست میں لے لیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں