The news is by your side.

Advertisement

اسرائیلی وزیر نے شامی صدر بشار الاسد کو قتل کرنے کی دھمکی دے دی

تل ابیب: اسرائیل کی سیکورٹی کابینہ کے وزیر نے کہا ہے کہ اگر شام نے اسرائیل پر حملہ کرنے کے لیے ایران کو اپنی سرزمین استعمال کرنے کی اجازت دی تو اسرائیل شامی صدر کو قتل کرسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی وزیر برائے توانائی یووال اسٹائنٹز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل ابھی تک شام کی خانہ جنگی میں ملوث نہیں ہوا ہے لیکن ایرانی سرگرمیوں پر ہمیں تشویش ہے۔

انھوں نے بالکل واضح الفاظ میں دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ ’’اگر اسرائیل پر حملہ ہوتا ہے تو اسد کو جان لینا چاہیے کہ یہ ان کا اور ان کی حکومت کا خاتمہ ہوگا۔‘‘

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اسد اپنی سرزمین امریکا کے خلاف حملوں کے لیے ایران کو استعمال کرنے دے گا تو اس صورت میں بھی اسے شام کا حکمران نہیں رہنے دیا جائے گا۔

میڈیا کی طرف سے جب اسرائیلی وزیر سے بشارالاسد کے قتل کے الفاظ کے سلسلے میں وضاحت دریافت کی گئی تو انھوں نے کہا کہ ہاں اسد کو اپنے خون سے اس کا تاوان ادا کرنا پڑے گا۔ تاہم انھوں نے کہا کہ یہ کوئی تجویز نہیں بلکہ ذاتی رائے ہے۔

ایران شام کو جدید ہتھیار فراہم کررہا ہے، اسرائیلی وزیر اعظم

واضح رہے کہ اسرائیلی وزیر کا یہ بیان ان مبینہ رپورٹس کے بعد آیا جس میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی حکام خود کو ایران یا اس کے پراکسیز کی طرف سے میزائل حملوں کے لیے تیار کررہے ہیں۔ ایران نے شام میں اپنی فوجی تنصیبات پر حالیہ فضائی حملوں کا انتقام لینے کا عزم کیا تھا اور یہ کہا تھا کہ اس کا ذمہ دار اسرائیل ہے۔

تاہم اسرائیل نے ان حملوں کی تصدیق کی نہ ہی تردید، یہ ضرور کہا کہ ان حملوں سے شام میں ایران کی مورچہ بندی رک جائے گی۔ واضح رہے کہ اسرائیلی میڈیا نے ملکی خفیہ ایجنسی کے حوالے سے یہ خبریں نشر کی تھیں کہ ایران شام کی حدود سے اسرائیلی فوجی اڈوں پر میزائل حملے کرنے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں