site
stats
عالمی خبریں

کھلونا ڈھونڈناجرم بن گیا،اسرائیل فوج کا فلسطینی بچے پر تشدد

غزہ : اسرائیلی فوجیوں نے اپنا کھلونا ڈھونڈنے والے 8 سالہ فلسطینی بچے کو دہشت گرد کہہ کر پکڑ لیا، خوف زدہ و سہمے ہوئے بچے کو تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے ایک گھنٹے تک علاقے میں گھماتے رہے۔

تفصیلات کے مطابق فلسطین میں اسرائیلی فوجیوں کے مظالم کی ہوشربا داستانیں زبان زد عام ہیں اور ان کے ظلم و تشدد سے بزرگ، خواتین سمیت بچے بھی محفوظ نہیں ہیں۔

ایسے ہی ایک واقعے کی ویڈیو نے سوشل میڈیا میں ہلچل مچا دی میں دیکھا جا سکتا ہے درجن بھر مسلح اسرائیلی سپاہی نے کھلونا ڈھونڈتے 12 سالہ بچے سفیان کو حراست میں لے لیا اور گھر گھر تلاشی کے لیے لیے گھومتے رہے۔

بتاؤ پتھراؤ کن گھروں سے ہوتا ہے؟ بچے سے سوال

معصوم سفیان اسرائیلی فوجیوں کے نرغے میں آکر خوف زدہ ہوگیا اور دہشت کے باعث رونے لگا اور اس دوران سپاہی سفیان سے گھروں میں جمع پتھر کے بارے میں پوچھتے رہے کہ کن گھروں سے فوجیوں پر کون کون پتھراؤ کرتا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اسرائیلی فوج معصوم سفیان کو ایک گھنٹے تک علاقے میں گھماتے رہے اور بچے کو ڈھال بناتے ہوئے اسے گھر گھر لے جا کر تلاشی لیتے رہے۔

فلسطینی بستی الخیل کی خواتین اس موقع پر جمع ہوگئیں اور اسرائیلی افواج کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے معصوم سفیان کو اسرائیلی فوج کے چنگل سے چھڑوانے میں کامیاب ہوگئیں۔

واضح رہے کہ اس وقت بھی ہزاروں معصوم فلسطینی بچے اسرائیلی جیلوں میں قید ہیں اور انہیں نہ تو کسی عدالت میں پیش کیا جاتا ہے اور نہ ہی بنیادی انسانی حقوق حاصل ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top