The news is by your side.

Advertisement

رشتہ داروں کو کیمپ جیل کی سیر کرانا افسر کو مہنگا پڑ گیا

لاہور: کیمپ جیل لاہور میں غیر متعلقہ افراد کو سیر کرانے پر اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ جیل کو نوکری سے فارغ کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ سال جیل قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے رشتہ دار مرد و خواتین کو جیل کی بیرکوں کا وزٹ کرانے والے اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ کیمپ جیل لاہور کو آئی جی جیل خانہ جات پنجاب مرزا شاہد سلیم بیگ نے نوکری سے فارغ کر دیا ہے-

رپورٹ کے مطابق اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ ذیشان نے اپنے 3 رشتہ داروں کو وفد کے ساتھ کیمپ جیل کی بیرکس کا دورہ کرایا تھا۔

لائن انچارج نے غیر متعلقہ افراد کو دورہ کروانے پر اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ کی شکایت سپرنٹنڈنٹ جیل کو کی تھی، جس پر تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی گئی-

تحقیقات میں اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ ذیشان علی قصور وار ٹھہرے، جس پر آئی جی جیل خانہ جات پنجاب نے انھیں نوکری سے فارغ کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا-

یاد رہے کہ جمعے کو کیمپ جیل لاہور سے چوری اور ڈکیتی کا ایک ملزم فرار ہو گیا تھا، جیل ذرایع کا کہنا تھا کہ کیمپ جیل سے 40 قیدیوں کو رہا کیا گیا تھا، لیکن عبداللہ نامی قیدی بھی انھی قیدیوں کی آڑ میں فرار ہوا، تاہم قیدی کو اردو بازار میں چھاپا مار کر پھر گرفتار کیا گیا، سپرنٹنڈنٹ کیمپ جیل نے 4 ملازمین کو معطل کر دیا تھا۔

ادھر جیلوں میں نئے آنے والے قیدیوں کا کرونا ٹیسٹ لازمی قرار دے دیا گیا ہے، بدھ کو کیمپ جیل میں 3 نئے حوالاتیوں کا کرونا ٹیسٹ مثبت آ گیا تھا، جن میں سے 2 قیدیوں کو اسپتال، ایک کو جیل میں قرنطینہ کیاگیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں