site
stats
صحت

عدالت نے بھی موبائل فون کو برین ٹیومر کی وجہ قرار دیدیا

روم :  اٹلی کی عدالت نے بھی موبائل فون کو برین ٹیومر کی وجہ قرار دیدیا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق اطالوی عدالت نے ایک اہم مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے موبائل فون کے بکثرت استعمال کو دماغ کی رسولی کا سبب قرار دیا ہے، یہ فیصلہ دنیا میں  اپنی نوعیت کا پہلا فیصلہ ہے۔

درخواست گزار رومیو نے ایک درخواست دائر کی، جس میں اپنے موقف میں کہا کہ فون کے مسلسل استعمال کی وجہ سے اس کی سماعت متاثر ہوئی اور بائیں کان سے سنائی دینا بند ہوگیا، ڈاکٹروں نے معائنہ کیا تو پتہ چلا کہ اس کے دماغ میں رسولی بن چکی ہیں۔

رومیو اٹلی کی نیشنل نیٹ ورک ٹیلی کام کمپنی کا ملازم تھا اور 1995ءمیں فون کا استعمال شروع کیا، وہ 15 سال تک بروزانہ تقریباً 4 گھنٹے کیلئے فون کا استعمال کرتا رہا۔


مزید پڑھیں : اسمارٹ فون کا استعمال گردن میں درد کا سبب


اٹلی کی نیشنل انشورنس کمپنی کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ ہرجانے کے طور پر رومیو کو 500 یورو ہر ماہ ادا کرے گی۔

برین ٹیومر کے ماہر ڈاکٹر ڈیوڈ جینکنسن کے مطابق ’’ہم جانتے ہیں لوگ اس بارے میں تشویش میں مبتلا ہیں لیکن اب تک ہزاروں لاکھوں افراد پر ہونے والی تحقیق کے باوجود اس بات کے شواہد ناکافی ہیں کہ موبائل فون کے استعمال سے برین ٹیومر پیدا ہوتا ہے۔

سائنس دانوں میں موبائل فون کے مضر اثرات کے بارے میں مختلف آرا پائی جاتی ہیں جن میں سے تاحال کسی کو حتمی نہیں کہا جا سکتا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top