The news is by your side.

Advertisement

جہانگیرترین کی نااہلی کیخلاف سپریم کورٹ میں نظرثانی کی درخواست دائر

  اسلام آباد : جہانگیرترین نے نااہلی کیخلاف سپریم کورٹ میں نظرثانی کی درخواست دائرکردی، جہانگیر ترین کو  اثاثے چھپانے پر نااہل قرار دیا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق جہانگیرترین نےنااہلی کیخلاف سپریم کورٹ میں نظرثانی کی درخواست دائرکردی، جہانگیر ترین نے بیان حلفی بھی جمع کرادیا۔

جہانگیرترین نےموقف اختیار کیا کہ کاغذات نامزدگی میں جان کراثاثے چھپانےکی کوشش نہیں کی۔ ٹرسٹ کے قیام کا مقصد بچوں کوبرطانیہ میں گھر کی فراہمی تھا۔

حلف نامہ میں کہا گیا ہے کہ خود کو اور بیوی کو تاحیات بینفشری بنانا محض حفاظتی اقدام تھا، ٹرسٹ پاکستان کے بینکنگ چینلز سے واجبات منتقلی کے ذریعے قائم کیا۔

جہانگیرترین نے حلف نامے میں کہا کہ میرے 4بچے ہیں اور چاروں شادی شدہ اورخودمختار ہیں۔


مزید پڑھیں :  جہانگیر ترین نا اہل قرار


یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین کو 15 دسمبر 2017 کو اثاثے چھپانےپر نااہل قرار دیا تھا، عدالت نے فیصلے میں کہا تھا کہ جہانگیرترین کو دو نکات پر نااہل کیا گیا ہے، انہوں نےملک کی اعلیٰ ترین عدالت سے جھوٹ بولا۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ جہانگیر ترین نے اپنے بیان میں مشکوک ٹرم استعمال کیے، یہ بھی کہا گیا کہ جہانگیرترین سماعت میں سوالات کے  درست جوابات نہیں دے رہے تھے‘ آف شورکمپنیاں ان کی ملکیت ہیں۔ اسی سبب وہ انسائیڈرٹریڈنگ کےجرم کے مرتکب ہوئے۔

صوبہ پنجاب کے ضلع لودھراں  سے جہانگیر ترین کی نااہلی کے بعد ضمنی انتخاب کے لیے ان کے بیٹے علی ترین نے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروائے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر ضرور شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں