The news is by your side.

Advertisement

جہانگیر ترین نے اپنے خلاف ایف آئی آر کا اندراج یکطرفہ کارروائی قرار دے دیا

لاہور : جہانگیر ترین نے اپنے خلاف ایف آئی آر کا اندراج یکطرفہ کارروائی قرار دیتے ہوئے کہا مجھ پر اور بیٹے پر عائد الزامات بے بنیاد اور من گھڑت ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جہانگیر ترین اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے اپنے خلاف ایف آئی آر کا اندراج یکطرفہ کارروائی قرار دے دیا۔

جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ مجھ پر اور علی ترین پر عائد الزامات بے بنیاد اور من گھڑت ہیں ، مالی امورمیں ہر طرح سےکلین ہوں اور بیٹے علی خان ترین کے تمام اثاثے قانونی ذرائع سے بنائےگئے۔

انھوں نے مزید کہا قانون کا احترام کرتا ہوں، تحقیقات کےدوران تعاون کیا گیا، میرے،بیٹے کے پاس اثاثوں کی مکمل قانونی منی ٹریل موجودہے، مقدمے کا اندراج افسوسناک ہے،حقائق کو نظر انداز کیا گیا ہے۔.

یاد رہے ایف آئی اے نے جہانگیر ترین کیخلاف گھیرا تنگ کرتے ہوئے منی لانڈرنگ ، فراڈ اور جعلی ٹرانزیکشن کے الزامات میں دو مقدمات درج کئے۔

ایف آئی آر میں کہا گیا کہ بندفیکٹری میں پیسے لگاکر 3ارب سے زائد کی منی لانڈرنگ کی گئی، سی ای اوجےڈی ڈبلیو نے جعلسازی سے 3 ارب14 کروڑ بند کمپنی کو منتقل کئے۔

دوسرے مقدمے میں کمپنی اکاؤنٹس سے غیر قانونی ٹرانزکشنز کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ جہانگیر ترین کے قابل اعتماد آدمی عامر وارث نے کمپنی اکاؤنٹس سے غیر قانونی ٹرانزکشنزکیں، عامر وارث نے غیرقانونی طریقےسےکمپنی اکاؤنٹس سے2ارب سےزائد رقم نکلوائی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں