The news is by your side.

Advertisement

صدرٹرمپ کی مسئلہ کشمیر پر پھر ثالثی کی پیشکش پر بھارتی وزیر خارجہ کا دوٹوک جواب

مسئلہ کشمیر پر بات صرف  پاکستان اور بھارت میں ہوگی

نئی دہلی : بھارتی وزیرخارجہ جے شنکر نے امریکی صدر ٹرمپ کی ثالثی کی پیشکش پر مسئلہ کشمیر کو پاکستان اور بھارت کا دوطرفہ مسئلہ قرار دے دیا اور کہا مسئلہ کشمیر پر بات صرف  پاکستان اور بھارت میں ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق مسئلہ کشمیر پر بھارت کی ہٹ دھرمی برقرارہے اور صدرٹرمپ کی ثالثی کی پیشکش پر بھارتی وزیرخارجہ جے شنکر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کہا کشمیرپاکستان اوربھارت کا دوطرفہ معاملہ ہے،بھارتی وزیرخارجہ امریکا پرواضح کردیا مسئلہ کشمیرپربات پاکستان،بھارت میں ہوگی۔

یاد رہے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مسئلہ کشمیر پر ایک بار پھرثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیرپرثالثی کیلئےتیارہوں،اس کادارومدارمودی پرہے، وزیراعظم عمران خان اور نریندرمودی لاجواب انسان ہیں۔

مزید پڑھیں : امریکی صدرڈونلڈٹرمپ کی مسئلہ کشمیرپرایک بار پھر ثالثی کی پیشکش

صدرٹرمپ کا کہنا تھا میرے خیال میں دونوں مسئلہ کشمیرپربہترین طریقےسےآگےبڑھ سکتے ہیں، دونوں ممالک چاہیں تو میں مسئلہ کشمیر پر کردار ادا کرنے کے لیےتیار ہوں۔

واضح رہے 22 جولائی کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور وزیراعظم عمران خان کی ملاقات ہوئی تھی ، جس میں ٹرمپ نے کشمیر کے معاملے پر ثالثی کا کردار ادا کرنے کی پیش کش کی تھی۔

امریکی صدر نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا تھا کہ مسئلہ کشمیر پر دونوں لیڈرز بڑا کردار ادا کر سکتے ہیں، آپ چاہتے ہیں کہ میں کردار ادا کروں تو میں بخوشی کروں گا، کشمیر ایک خوبصورت خطہ ہے وہاں کئی دہائیوں سے صورتحال خراب ہے جسے اب ٹھیک کرنا ہوگا۔

وزیر اعظم عمران خان کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے انکشاف کیا تھا کہ بھارتی وزیر اعظم مودی نے کہا کیا آپ ثالث بنیں گے، میں نے پوچھا کس چیز کی ثالثی؟ تو بھارتی وزیر اعظم نے کہا کشمیر پر ثالثی کا کردار ادا کریں۔

بعد ازاں بھارتی وزیر خارجہ جے شنکر نے راجیہ سبھا میں امریکی صدر کے بیان اور ثالث بننے کی پیشکش کو مسترد کردیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں