site
stats
عالمی خبریں

پاکستان کے خلاف انتہائی اقدام کے لئے تیار ہیں، امریکہ کی دھمکی

واشنگٹن : امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس کا کہنا ہے کہ امریکا نے کہا ہے کہ دہشتگردوں کے خلاف پاکستان سے ملکرکام کرنے کی حکمت عملی کامیاب نہیں ہوئی تو ہراقدام کریں گے، صدرٹرمپ ہرضروری اقدام کےلئےتیارہیں۔

تفصیلات کے مطابق امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے امریکی سینیٹ کی دفاعی کمیٹی کو پاک افغان پالیسی پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے خلاف انتہائی اقدام کے لئے تیار ہیں، کوئی بھی قدم اٹھانے سے پہلے پاکستان سے بات کریں گے، دہشتگردوں کی مبینہ معاونت پرپاکستان سے بات چیت کامیاب نہ ہوئی تو صدرٹرمپ ہرضروری اقدام کرنے کے لئے تیار ہیں۔

امریکہ نے ایک بار پھر نیا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد کو نیٹو کی ضروریات،مطالبات پر غور کرنا چاہئے، خطے اور افغانستان میں پاکستان کے کردار کا بغور جائزہ لے رہے ہیں ، امریکہ افغانستان میں امریکہ کو محفوظ بنانے کیلئے موجود ہے۔

جیمز میٹس نے کہا کہ طالبان کےشدت پسندپالیسی رد کرنے سے ہی وہاں سیاسی عمل کامیاب ہوگا، اس امر کو یقینی بنانا ہو گا کہ جنوبی ایشیا کی سرزمین امریکہ کیخلاف استعمال نہ ہو۔

امریکی وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ امریکہ کو ایک بار پھر میں نئی حکمت عملی کے ساتھ اسلام آباد کے ساتھ کام کرنے کے لیے کوشش کرنی ہوگی، اگر ہماری کوششیں بے سود گئیں تو امریکی صدر جو ضروری سمجھیں اس حوالے سے فیصلہ کر سکتے ہیں۔

جیمز میٹس نے کہا کہ امریکا کوایران سے جوہری معاہدہ برقراررکھنا چاہئیے، صدرٹرمپ نے ایران جوہری معاہدے کوشدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔


مزید پڑھیں : افغانستان میں دہشت گردوں کی پناہ گاہوں سے متعلق پاکستان کے خدشات پر کھل کر بات کرنا چاہتے ہیں، جیمز میٹس


انہوں کا کہنا تھا کہ جنوبی ایشیا کی سرزمین اتحادیوں کیخلاف بھی استعمال نہیں ہونے دینگے، اس وقت خطےمیں دہشتگردگروہوں پرقابوپانےکی ضرورت ہے، ٹرمپ کی افغان،جنوبی ایشیا کی پالیسی کا39ممالک نےخیرمقدم کیا ہے۔

اس سے قبل اپنے دورہ افغانستان کے دوران امریکی وزیر دفاع جیمس میٹس کا کہنا تھا کہ اتحادیوں کے ساتھ مل کر افغانستان کو محفوظ بنانے کیلیے کوشش کرینگے ،افغان سرزمیں پر دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں سے متعلق پاکستان کے خدشات پر اسلام آباد سے بات کریں گے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top