شمالی کوریا نے ایٹمی ہتھیاراستعمال کئے تومنہ توڑ جواب دیا جائے گا، جیمز میٹس
The news is by your side.

Advertisement

شمالی کوریا نے ایٹمی ہتھیاراستعمال کئے تومنہ توڑ جواب دیا جائے گا، جیمز میٹس

سیول :امریکی وزیردفاع جیمز میٹس نے کہا ہے کہ جوہری شمالی کوریا قبول نہیں، شمالی کوریا نے ایٹمی ہتھیاراستعمال کئے تومنہ توڑ جواب دیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق جنوبی کوریا کے دارالحکومت سئیول میں پریس کانفرنس سے خطاب میں امریکی وزیردفاع جیمز میٹس کا کہنا تھا شمالی کوریا کی فوج کا امریکا اوراتحادیوں کی فوج سے کوئی مقابلہ نہیں، شمالی کوریا کا مسئلہ سفارتی طریقے سے حل کرنا ترجیح ہے۔

جیمز میٹس نے کہا شمالی کوریا کے جوہری اور میزائل پروگرام سے اس کی سیکورٹی مضبوط نہیں ہوگی، شمالی کوریا کی طرف سے نیوکلیائی خطرہ بڑھنے کے پیش نظر جنوبی کوریا کے ساتھ فوجی اور سفارتی تعاون کی نئی ناگزیر صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔

انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ کوجوہری شمالی کوریا قبول نہیں ، شمالی کوریا کی جانب سے امریکہ یا اس کے اتحادیوں کے خلاف کسی بھی قسم کے  حملے کا بھرپور جواب دیا جائے گا۔


شمالی کوریا کا امریکہ کے خلاف جنگ میں کوئی جوڑ نہیں‘ امریکی وزیردفاع


یاد رہے کہ اس سے قبل بھی  امریکی وزیرِ دفاع جیمز میٹس نے شمالی کوریا سے کہا تھا کہ وہ ایسے اقدامات کرنے سے گریز کرے جو اسے اس کی حکومت کے خاتمے اور عوام کی تباہی کی جانب لے جائیں

 

خیال رہے کہ امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے شمالی کوریا کو دھمکی آمیز پیغام میں کہا تھا کہ امریکی فوج شمالی کوریا سے نمٹنے کےلیے تیار ہے، عسکری حل اب بالکل موجود ہے، ’لاکڈ اینڈ لوڈڈ‘، کیا شمالی کوریا دانشمندی کا مظاہرہ کرے گا۔ امید ہے کم جونگ ان کوئی اور راستہ اختیار کریں گے۔

دوسری جانب شمالی کوریا نے امریکہ اور جنوبی کوریا کی فوجی مشقوں کو اشتعال انگیزقرار دیتے ہوئے وارننگ دی تھی کہ ایٹمی جنگ کسی بھی وقت چھڑ سکتی ہے، ان کے ملک کو قومی اور ملکی دفاع کے لیے ایٹمی ہتھیار رکھنے کا حق ہے۔

نائب سفیر کم ان ریونگ کا کہنا تھا کہ 1970 سے لے کر اب تک شمالی کوریا کو امریکی کی جانب سے براہ راست خطرات کا سامنا رہا ہے، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنے خطاب میں شمالی کوریا کو تباہ کرنے کی دھمکی دے چکے ہیں لہذا امریکہ کی جانب سے خطرات کے پیش نظر شمالی کوریا کواپنے دفاع کے لیے ایٹمی ہتھیاروں سے مسلح ہونا ضروری ہے۔


 

اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں