The news is by your side.

Advertisement

رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کو 14دن کے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیاگیا

اسلام آباد : رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کوچودہ دن کے جوڈیشل ریمانڈ پرجیل بھیج دیاگیا ، نہر زبردستی کھولنے پر مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا گیا، آٹھائیس مئی کو کسانوں کے احتجاج کے موقع پر جمشید دستی نے ڈنگہ نہر کو زبردستی کھول دیا تھا، جس پر وزیر آبپاشی پنجاب نے ان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا تھا۔

مظفرگڑھ پولیس نے رات گئے جمشید دستی کو گرفتار کرکے مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا، جس کے بعد جمشید دستی کو چودہ روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا۔


مزید پڑھیں : رکن قومی اسمبلی جمشید دستی گرفتار


دوسری جانب آئل ٹینکرزایسوسی ایشن نے جمشید دستی کی گرفتاری پر ملک بھر میں سپلائی بند کرنے کی دھمکی دے دی ہے، ایسوسی ایشن کے صدر فیض اللہ آفریدی نے کہا ہے کہ 24 گھنٹے میں جمشید دستی کو رہا نہ کیا گیا تو ملک بھر میں احتجاج کریں گے اور گرفتاری کے خلاف ملک بھر میں تیل کی سپلائی بند کردیں گے۔

یاد رہے کہ جمشید دستی مظفر گڑھ کے حلقہ این اے 178 سے گزشتہ دو انتخابات سے کامیاب ہوتے آرہے ہیں ، انہوں نے 2010 میں بی اے کی جعلی ڈگری کا الزام لگنے پر نیشنل اسمبلی سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

بعد ازاں عدالتی احکامات کے بعد جمشید دستی نے دوبارہ ضمنی انتخابات میں حصہ لیا اور کامیاب ہوکر اسمبلی تک پہنچے، جمشید دستی نے 2012 میں پیپلزپارٹی سے علیحدگی کا اعلان کردیا تھا۔

اپریل 2013 میں جمشید دستی پر جعلی ڈگری کا الزام ثابت ہونے کے بعد الیکشن کمیشن کی جانب سے تین سال کی پابندی اور پانچ ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی گئی تھی تاہم انہوں نے سپریم کورٹ میں فیصلے کے خلاف پٹیشن بھی دائر کی تھی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں ۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں