The news is by your side.

جاپان کا تیل کے محفوظ ذخائر سے متعلق اہم فیصلہ

ٹوکیو: جاپان نے بھی تیل کے محفوظ سرکاری ذخائر فروخت کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق خام تیل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں سے نمٹنے کے لیے حکومتِ جاپان نے غیر معمولی قدم اٹھاتے ہوئے امریکی حکومت کی درخواست پر تیل کے محفوظ سرکاری ذخائر استعمال کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

جاپان کے وزیر اعظم فومیو کِشیدا نے بدھ کے روز کہا کہ ان کی حکومت امریکی درخواست کے جواب میں تیل کے ذخائر کو اس طرح جاری کرے گی، جس سے جاپانی قانون کی خلاف ورزی نہ ہو، جو صرف اس صورت میں اسٹاک کی ریلیز کی اجازت دیتا ہے جب سپلائی میں خلل پڑنے کا خطرہ ہو۔

واضح رہے کہ جاپان کا شمار امریکا سمیت توانائی کا زیادہ استعمال کرنے والے ان کئی ممالک میں ہوتا ہے، جو خام تیل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں سے نمٹنے کے لیے یہ قدم اٹھا رہے ہیں۔

روئٹرز کے مطابق پیر کو ذرائع نے بتایا تھا کہ جاپانی اور بھارتی حکام امریکا اور دیگر بڑی معیشتوں کے ساتھ مل کر خام تیل کے قومی ذخائر کو جاری کرنے کے طریقوں پر کام کر رہے ہیں، لیکن تیل کی اس طرح کی ریلیز کا وقت ابھی تک واضح نہیں کیا گیا ہے۔

جاپانی حکومت اب اپنے محفوظ ذخائر میں سے لاکھوں بیرل تیل فروخت کرے گی، اور یہ مقدار کئی روز کی ضروریات پوری کرنے کے لیے کافی ہوگی۔ جاپان کے محفوظ ذخائر کی مقدار 145 روز تک ملک میں استعمال ہونے والے تیل کے برابر ہے۔

وہائٹ ہاؤس کی جانب سے کہا گیا ہے کہ امریکی اقدام، جاپان، چین، بھارت، جنوبی کوریا اور برطانیہ سمیت دیگر ملکوں کے ساتھ ایک ہی وقت میں اٹھایا گیا ہے، تیل جاری کرنے کا یہ اپنی طرز کا پہلا مربوط قدم ہوگا، اور امریکا آئندہ کئی ماہ کے دوران 5 کروڑ بیرل تیل فروخت کے لیے پیش کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں